16

اسمارٹ جنگل راوی ریور پراجیکٹ کا اہم حصہ، سینسرز کے نظام سے لیس ہوگا،عمران خان

شیخوپورہ(نمائندہ پی این این اردو)وزیراعظم عمران خان نے کہا ہے کہ اسمارٹ جنگل راوی ریور پراجیکٹ کا اہم حصہ ہے، سینسرز اور نگرانی کے نظام سے لیس ہوگا،اسمارٹ جنگل کے افتتاح کی تقریب سے وزیراعظم عمران خان نے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ نئی نسل کیلئے ایک بہتر پاکستان چھوڑ کر جانا ہے،ملک میں جنگلات کو اپنی آنکھوں سے تباہ ہوتے دیکھا ہے، لاہور میں ماحولیات کی تباہی دیکھی، پاکستان سے جیسے جیسے جنگلات کا خاتمہ ہوا جانور بھی چلے گئے، لاہورمیں میٹھا پانی تھا، لوگ نلکوں سے پانی پیتے تھے، آج لاہور میں ماحولیاتی تبدیلی سے پانی کا لیول نیچے جا رہا ہے،وزیراعظم کا کہنا تھا کہ راوی ریور پراجیکٹ لاہور ہی نہیں، پاکستان کیلئے بھی اہم ہے، آلودگی سے بچوں اور بزرگوں کی جانیں خطرے میں ہیں، ن لیگ کی حکومت میں بھی یہ پراجیکٹ نہیں بنایا گیا، سارے لاہور کے سیوریج کا پانی دریائے راوی میں جا رہا ہے، راوی میں جانیوالا سیوریج کا پانی سندھ تک جاتا ہے، پوری دنیا میں پانی کا مسئلہ آنے والا ہے،عمران خان نے مزید کہا کہ اسمارٹ لاک ڈاؤن کے بعد اب اسمارٹ فارسٹ بن رہا ہے، ٹیکنالوجی کے استعمال سے پودوں کی نشونما بھی مانیٹر کرسکیں گے، سینسرز سے پتہ چل جائے گا کہاں پر درخت کاٹا جا رہا ہے،قبل ازیں وزیراعظم نے پودا لگا کر پاکستان کے پہلے اسمارٹ جنگل کا افتتاح کیا،عمران خان کو رکھ جھوک اسمارٹ جنگل پر بریفنگ دی گئی۔ وزیراعلیٰ پنجاب عثمان بزدار، شہباز گل بھی موجود تھے،وزیر مملکت فرخ حبیب کا کہنا تھا کہ ‏پاکستان کے پہلا سمارٹ جنگل راوی ریور فرنٹ سٹی رکھ جھوک میں اہم سنگ میل ہے، ہواوے کی جدید ٹیکنالوجی سے درختوں کی نشونما اور جنگلی حیات کی افزائش میں مدد حاصل ہوگی، 24 ہزار کینال جگہ پر 1 کڑور درخت لگیں گے،معاون خصوصی شہباز گل نے کہا کہ وزیراعظم کا ویژن ہے کہ پاکستان کو سرسبز و شاداب بنانا ہے، 24 ہزار کنال پر نیا جنگل لگایا جائے گا،24 ہزار کنال پر چینی کمپنی ہواوے کی پارٹنرشپ سے اسمارٹ جنگل لگایا جائے گا، جنگل میں سینسرز اور کیمراز لگائے جائیں گے، راوی ریور منصوبہ 24 ہزار کنال پر محیط ہے، منصوبے کو 60 ہزار کنال تک بڑھایا جائے گا، منصوبے پر 3 ارب روپے لاگت آئے گی۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں