11

افغان سفیر کی بیٹی کے اغوا میں ملوث ملزمان ایک دو روز میں گرفتار کر لیں گے،شیخ رشید


اسلام آباد(بیورو رپورٹ)وفاقی وزیر داخلہ شیخ رشید نے کہا ہے کہ افغان سفیر کی بیٹی کے مبینہ اغوا کے ملزمان ایک دو روز میں گرفتار کر لئے جائیں گے،معاملے کی جیسے جیسے تحقیقات کر رہے ہیں، کڑیاں مل رہی ہیں،وزیر داخلہ شیخ رشید نے پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ وزیراعظم نے واقعہ میں ملوث ملزمان کو فوری گرفتارکرنےکی ہدایت کی،عمران خان نے حکم دیا ہے کہ افغان سفیرکےکیس کوترجیحی بنیادوں پرحل کیاجائے،وزیر داخلہ نے کہا کہ بھارت نے افغان سفیرکی بیٹی کےاغواکیس کوبہت اچھالا، بھارت پاکستان کوبدنام کرنے کیلئےاپنےمیڈیاکواستعمال کرتاہے،اغوا واقعے سے متعلق تفصیلات سے آگاہ کرتے ہوئے شیخ رشید نے کہا کہ افغان سفیرکی بیٹی گھرسےپیدل نکلی، ٹیکسی سے کھڈامارکیٹ پہنچی،لڑکی ایف 6 سے گھر جا سکتی تھی لیکن ایف 9 جانےکوترجیح دی، اس کے کھڈا مارکیٹ سے راولپنڈی جانے کی تحقیقات کررہےہیں،واقعہ 16 جولائی کو ہوا، رپورٹ کل کیاگیا۔امید ہے ایک دو روزمیں ملزمان گرفتارہوجائیں گے،انہوں نے کہا کہ خطےمیں پاکستان کی اہمیت بہت بڑھ چکی ہے، وزیراعظم کی خارجہ پالیسی کی دنیامیں مقبولیت ہے، کل بذریعہ ہیلی کاپٹر 15 لوگ داسو گئے، داسومیں کام بند ہونے کی افواہیں پھیلائی گئیں، چین کےساتھ مل کر داسو واقعہ کی تحقیقات کررہےہیں، پاک سرزمین کوافغانستان کیخلاف استعمال نہیں ہونےدیں گے، افغانستان سےبھی یہی توقع رکھتےہیں،پاکستان میں افغان سفیر کی بیٹی کے مبینہ اغوا اور تشدد کا مقدمہ تھانہ کوہسار میں درج کر لیا گیا،افغان سفیر کی بیٹی نے اپنے بیان میں کہا ہے کہ گھر سے کچھ فاصلے پر کھڑی ٹیکسی میں سوار ہو کر شاپنگ کرنے گئی، واپسی پر ایک اور ٹیکسی میں سوار ہوئی جو کچھ دیر بعد راستے میں رک گئی اور اچانک ایک شخص آکر گاڑی میں بیٹھ گیا،لڑکی کےمطابق نامعلوم شخص نے ان کے ساتھ مارپیٹ شروع کر دی، تشدد سے وہ بے ہوش ہو گئیں،ان کا کہنا تھا کہ جب آنکھ کھلی تو گندگی کے ڈھیر پر تھی، گھر کی بجائے پارک چلی گئی،والد کے آفس کولیگ کو بلایا جو مجھے گھر لے کر گیا،پریس کانفرنس کے دوراناغوا سے متعلق آگاہ کرتے ہوئے وفاقی وزیر شیخ رشید نے بتایا کہ افغان سفیرکی بیٹی گھرسےپیدل نکلی، ٹیکسی سے کھڈامارکیٹ پہنچی۔ لڑکی ایف 6 سے گھر جا سکتی تھی لیکن ایف 9 جانےکوترجیح دی، اس کے کھڈا مارکیٹ سے راولپنڈی جانے کی تحقیقات کررہےہیں۔ واقعہ 16 جولائی کو ہوا، رپورٹ کل کیاگیا۔امید ہے ایک دو روزمیں ملزمان گرفتارہوجائیں گے،قبل ازیں وزیراعظم عمران خان نے افغان سفیر کی بیٹی کے اغواء کا نوٹس لیتے ہوئے ملزمان کو پکڑنے کے لیے ہر ممکن اقدامات اٹھانے کی ہدایت کی ہے۔ انہوں نے حکم دیا کہ وفاقی وزیر داخلہ شیخ رشید، اسلام آباد پولیس اور قانون نافذ کرنے والے تمام ادارے ترجیحی بنیادوں پر معاملے کی تحقیقات کریں۔ تمام ادارے معاملے کی تحقیقات میں وفاقی پولیس کے ساتھ تعاون کریں۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں