5

اوور سیز پاکستانیز کی درخواست پر ایک ماہ میں عملدرآمد نہ کرنیوالے آفیسر کیخلاف کارروائی کی جا سکتی ہے،وسیم رامے

ملتان،وائس چئیرمین اوور سیز پاکستانیز فاونڈیشن پنجاب وسیم رامے کی صدارت میں ڈی سی آفس کے کمیٹی روم میں اجلاس منعقد ہوا جس میں کمشنر اوورسیز پاکستانیز پنجاب خادم عباس شاہ،ایڈیشنل ڈپٹی کمشنر ریونیو محمد طیب خان،چیئرمین اوور سیز کمیٹی مخدوم شعیب اکمل ہاشمی،اسسٹنٹ کمشنر سٹی خواجہ عمیر، ایس پی طلعت حبیب اور ممبر رانا شیراز کے علاوہ مختلف محکموں کے افسران نے شرکت کی،وائس چئیرمین وسیم رامے نے اوور سیز پاکستانیوں کے مسائل سنے اور انکے حل کے لئے احکامات جاری کئے،وسیم رامے نے اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ حکومت پنجاب نے اوور سیز کے ایکٹ میں ترمیم کرکے افسران کو باختیار کر دیا گیا ہے،انہوں نے کہا کہ تمام افسران ایک ماہ کے اندر اوور سیز پاکستانیز کی درخواستوں پر عملدرآمد یقینی بنائیں،ایک ماہ میں عملدرآمد نہ کرنیوالے آفیسر کے خلاف پیڈا ایکٹ کے تحت کاروائی کی جا سکے گی،وائس چئیر مین وسیم رامے نے بتایا کہ ہاوسنگ کالونیوں کے حوالے سے نیب اور اوور سیز پاکستانیز فاونڈیشن کے مابین ایم او یو پر دستخط ہو گئے ہیں جس کے تحت اب بیرون ملک رہنے والے پاکستانیوں کے ساتھ دھوکہ اور فراڈ کرنیوالی ہاوسنگ کالونیوں کے کیسسز نیب کو بھجوائے جائیں گے،ایڈیشنل ڈپٹی کمشنر ریونیو محمد طیب خان نے اس موقع پر بتایا کہ اوور سیز پاکستانیز کمیٹی ملتان میں429 درخواستیں جمع کرائی گئیں جن میں سے کمیٹی نے اب تک 320 کیس نمٹا دئے ہیں۔انہوں نے بتایا کہ 50 کیس سول کورٹ اور ایک کیس ہائیکورٹ میں زیر سماعت ہے جبکہ ریونیو کورٹ میں کوئی کیس زیر سماعت نہیں ہے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں