6

آر ایچ سی میں ایکسرے روم 7ماہ سے بند،مشینر ی خراب ہونے کا خدشہ

کچاکھوہ رورل ہیلتھ سنٹر پچھلے سات ماہ ہوگئے ایکسرے آپریٹر ریٹائر ہوئے اس کے بعد ابھی تک کوئی ایکسرے آپریٹر نہیں لگایا گیا،جس کی وجہ سے ایکسرے روم بند پڑا ہے اور لاکھوں روپے کی مشینری اور کیمیکل ضائع ہونے کا خطرہ ہے،عوام کو 4 سو سے 7 سو روپے لگا کر پرائیویٹ ایکسرے کروانے پر مجبور ہے جو کہ غریب طبقہ برداشت نہیں کر سکتا اس بارے میں جب سینئر میڈیکل آفیسر ڈاکٹر طارق محمود سے بات ہوئی ان کا کہنا ہے کہ سی ای او ہیلتھ خانیوال کو بارہالکھ چکے ہیں ڈی سی خانیوال سے مطالبہ ہے کہ فی الفور کچاکھوہ رورل ہیلتھ سینٹر ایکسرے آپریٹر لگایا جائے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں