10

اپوزیشن ہوش کے ناخن لے،مودی ایجنڈے کو تقویت نہ دے،فردوس عاشق

لاہور،وزیراعلیٰ پنجاب کی معاون خصوصی ڈاکٹر فردوس عاشق اعوان نے کہا ہے کہ کشمیر حساس مسئلہ ہے،اس پر بات کرتے اور حکومت پر تنقد کرتے وقت حدود کا تعین کرنا چاہئے،پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ وزیراعظم عمران خان نے ہدایت کی ہے کہ کشمیر کے الیکشن کو عوام کی امنگوں کے مطابق ہونا چاہئے اور کوئی بھی ایسا غیرآئینی اور غیرقانونی قدم نہ اٹھایا جائے جس سے الیکشن داغدار ہو۔ جبکہ آزاد جموں کشمیر کے موجودہ وزیراعظم عوام کے ٹیکسوں کا پیسہ (ن) لیگ کے جلسوں اور پروٹوکول پر بہا رہے ہیں،جو لوگ کشمیر کا واویلا مچا کر بچگانہ حرکتیں کر رہے ہیں انہیں ہوش کے ناخن لینا چاہئیں، کشمیر ایک حساس مسئلہ ہے،کشمیر میں آپ کی توپوں کا رخ مودی کی طرف ہونا چاہیے۔ کچھ نابالغ اور نادان سیاست دان مودی پر انگلی اٹھانے کی بجائے اپنے ہی اداروں پر انگلی اٹھا رہے ہیں۔ الیکشن لڑیں، ووٹ مانگیں مگر پاکستان کے دفاع اور قومی سلامتی کا خیال رکھیں۔ کشمیریوں کے وکیل عمران خان پر تنقید مودی کے نظریئے کو تقویت دینے کے مترادف ہے۔ تنقید ضرور کریں لیکن اپوزیشن کو کچھ حدود کا تعین کرنا چاہیے۔ یہ بدروحیں جدھر مرضی بھٹک لیں کشمیری فیصلہ کر چکے ہیں اور انہوں نے مینڈیٹ عمران خان کو دینا ہے۔ ایک سوال کے جواب میں انہوں نے کہا کہ نواز شریف کا بیانیہ لوٹو اور پھوٹو کا ہے۔ ادارے پاکستان کی سلامتی کی ضمانت ہیں۔ پوری قوم سیسہ پلائی دیوار کی طرح اپنے اداروں کے ساتھ کھڑی ہے۔ شاہی خاندان اور ان کے درباری ملک کو کمزور کرنا چاہتے ہیں۔ مریم ایسے بیانات دے کر جندال سے کاروباری تعلقات مضبوط کرتی ہیں۔ انہوں نے کہا کہ شہباز شریف نے بھاری کک بیکس لے کر بڑے بڑے معاہدے کئے لیکن بجلی کو گرڈسٹیشن تک پہنچانے کا انتظام نہ کیا۔ مہنگی بجلی پیدا کرنے والے منصوبوں کی حوصلہ افزائی کی مگر سستے ہائیڈل پاور منصوبوں کی طرف توجہ نہیں دی۔ پی ٹی آئی کی حکومت نہ صرف نئے بجلی کے منصوبوں بلکہ گرڈ سٹیشن اور ٹرانسمشن لائنز میں بہتری کے لئے بھی کام کر رہی ہے۔ انہوں نے بتایا کہ داتا دربار کے انفراسٹرکچر کی بہتری‘ زائرین کو بہتر سہولیات فراہم کرنے کے ساتھ اس مقام کو مذہبی سیاحت اور دینی تعلیم کا مرکز بنانے کے منصوبے کی بھی وزیراعظم نے منظوری دیدی ہے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں