11

ایم ڈی اے کی 87ویں گورننگ باڈی کا اجلاس

ملتان،چیئرمین ایم ڈی اے رانا عبدالجبارکی صدارت میں ایم ڈی اے کی 87ویں گورننگ باڈی کا اجلاس ہوا،اجلاس میں وائس چیرمین ایم ڈی اے فرخ نسیم راں،وائس چیرمین ایم ڈی اے اشرف ناصر خان، ڈائریکٹر جنرل ایم ڈی اے آغا محمد علی عباس،ایڈیشنل ڈائریکٹر جنرل ایم ڈی اے چوہدری محمد اصغر، مینیجنگ ڈائریکٹر واسا ناصر اقبال،نمائندہ کمشنر ملتان انجینئر محمد ارفع حسن،نمائندہ ڈپٹی کمشنر ملتان اخلاق احمد،ڈیپارٹمنٹ لاہورمسرت بی بی،ڈیپارٹمنٹ لاہور محمد عثمان(اسسٹنٹ ڈائریکٹر ٹیکنیکل)،نمائندہ فنانس ڈیپارٹمنٹ لاہورمحمد ارشاد حسین (ڈسٹرکٹ اکاؤنٹس آفس ملتان)،لاہورنذیر احمد چغتائی(ڈائریکٹر انجینئرنگ پی ایچ اے ملتان)،ڈائریکٹر ایڈمن و فنانس ایم ڈی اے شاکر عباس بزدار،ڈائریکٹر ٹاؤن پلاننگ ایم ڈی اے محسن رضا، ڈائریکٹر اربن پلاننگ ایم ڈی اے خواجہ محمد وقاص اور ڈائریکٹر ایڈمنسٹریشن واسا موسی خان شریک تھے۔اجلا س میں ایم ڈی اے اور واسا کے ایجنڈا آئٹمز منظوری کے لئے پیش کئے گئے،ڈائریکٹر جنرل ایم ڈی اے آغا محمد علی عباس نے ہاؤس کو ایجنڈا آئٹمز کی بریفنگ پیش کی۔ہاؤس نے ایم ڈی اے میں سکیل 19کے آفیسرز کو پنجاب سول سرونٹس رولز 2010ء کے مطابق سکیل 20میں بطور چیف انجینئر اور چیف ٹاؤن پلانر میں ترقی دینے کی منظوری دی۔سکیل 17کی اسسٹنٹ ڈائریکٹر فنانس کی 2نئی سیٹوں کیلئے کمیٹی تشکیل دینے کی منظوری لی گئی۔کمیٹی 2سے 3ہفتوں میں اس کا فیصلہ کرے گی۔ایم ڈی اے سے وابستہ عوام کی جائیداد کی وراثت کیلئے پنجاب گورنمنٹ کے طریقہ کار کے مطابق وراثت کی منتقلی کے طریقہ کار کو آسان کر دیا گیا۔نادرا سے فیملی رجسٹریشن سرٹیفیکٹ (FRC)کے ذریقے وراثت منتقل کرنے کی اجازت لی گئی۔ملتان پبلک سکول روڈ پر میٹرو پولیٹن کارپویشن کے زیر کنٹرول علاقہ کو ایم ڈی اے کا کنٹرولڈ ایریا بنانے کی اجازت لی گئی جس کی حتمی منظوری ایڈمنسٹریر میٹرو پولیٹن کارپوریشن ملتان دیں گے۔ واسا میں لیگل ایڈوائزر کی فیس میں اضافہ کر کے ایم ڈی اے میں لی جانے والی فیس کے برابر کرنے کی اجازت لی گئی اور لیگل ایڈوائزر کی تعداد میں اضافہ کرنے کی بھی اجازت لی گئی۔واسا میں سکیل 16کی لٹیگیشن آفیسر کی سیٹ ختم کرنے اور سکیل 18میں ڈپٹی ڈائریکٹر لیگل کی پوسٹ بنانے کی اجازت لی گئی۔واسا میں ورک چارج،ڈیلی ویجز اور کنٹیجنٹ سٹاف کو بھرتی کرنے کیلئے گورنمنٹ آف پنجاب کی طرف سے دیئے گئے طریقہ کار کو اپنانے کی اجازت لی گئی۔واسا میں سرکل انچارج ریکوری اور ریکوری انسپکٹر کی تعلیمی قابلیت کو مدنظر رکھتے ہوئے ترقی دینے کی اجازت لی گئی.

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں