22

بستی ملوک پولیس جرائم پیشہ عناصر کی سرپرستی کرتی ہے،انصاف نہ ملا تو خود سوزی کرلوں گی،سعدیہ آصف

ملتان،فاروق پورہ کی رہائشی سعدیہ آصف نے تھانہ بستی ملوک کے خلاف پریس کانفرس کرتے ہوئے بتایا کہ میراخاوند پولٹری سپلائی کاکام کرتا ہے بشیر فیڈ کی طرف کال آئی آکر مال لے جاؤمیرا خاوند پہنچا لیبر نے گاڑی لوڈ کرنا شروع کردی، شاہد اقبال سے مرغی کی ریٹ لسٹ پر بحث شروع ہوگی،شاہد اقبال نے چھ نامعلوم افرادکے ساتھ مل کر حملہ کردیا اور تشدد کرتے ہوئے فارم میں بند کردیا،اوربارہ لاکھ روپے قبضہ میں لئے،میں نے موقع پر پہنچ کر پولیس کو کال کی اور اپنے شوہرکو بازیاب کروایا پولیس دونوں کو تھانے لے گی بشیر فیڈ کے مالک شاہد اقبال کے ساتھ مل کر پولیس نے جھوٹا پرچہ درج کیا اب پولیس شاہد اقبال کے ساتھ سازباز ہوکر آٹھ لاکھ روپے واپس کررہا ہے،تھانہ بستی ملوک پولیس جرائم پیسہ عناصر کی سرپرستی کرتی ہے،شاہد اقبال پولیس کے ساتھ مل کر قتل اور سنگین نتائج کی دھمکیاں دے رہاہے،سعدیہ آصف نے مطالبہ کیا ہے کہ میرے خاوند کے خلاف جھوٹا پرچہ خارج کیا گیا اورپولیس شاہد اقبال سے بارہ لاکھ روپے لے کردے ورنہ تھانے کے سامنے خودسوزی کرلوں گی اور اس کی تمام ذمہ داری پولیس پر ہوگی،سعدیہ آصف نے اعلیٰ حکام سے انصاف کی اپیل کی ہے وزیر اعظم پاکستان،چیف جسٹس پاکستان،وزیراعلیٰ پنجاب سے پولیس کے خلاف نوٹس لینے کا مطالبہ کیا ہے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں