20

بشری مرزا کی جانب سے مجھ پر لگائے گئے الزمات پر جوڈیشل کمیشن بنایا جائے،خالد جاوید وڑائچ

ملتان(سٹاف رپورٹر)پاکستان تحریک انصاف کے ضلعی صدر خالد جاوید وڑائچ نے ایک بیان میں کہا کہ ہونے والے واقعہ میں میرے خلاف جھوٹ کا پلندہ تیار کرکے مجھے بدنام کرنے کی کوشش کی گئی،جس کے اصل حقائق یہ ہے کہ بشری بی بی جو میرے پاس بطور ٹیچر کام کرتی تھی جس پر اپنی برانچ میں کرایہ نامہ بھی اسی کے نام پر متعلقہ تھانہ میں جمع کروایا2020میں ہم اس پر ترس کھاکر اسے سکول میں بطور سینئر ٹیچر مقرر کردیا،لیکن بعد ازاں اس نے اپنے دیگر لوگوں کی مدد سے ہم سے دھوکہ دہی کرتے ہوئے ہمارے سکول کے بورڈ اتارکر اپنے بورڈ آویزاں کردیئے جس پر ہم نے متعلقہ پولیس کو اطلاع دی،جس پر پولیس بشری بی بی کو پکڑ کر تھانہ لے گئی،جہاں خاتون نے اپنی غلطی تسلیم کرتے ہوئے معافی نامہ تحریری لکھ کر دیا،جو پولیس کے پاس موجود ہے،بعد ازاں خاتون نے اپنے دیگر غنڈہ گرد عناصر سے ملی بھگت کرتے ہوئے لالچ میں آکر سکول ہذاپر حملہ کردیا،وڈیو میں دیکھا جاسکتا ہے کہ حملہ آور بشری بی بی کے غنڈے تھے جہنوں نے میرے ملازمین پر حملہ کیا،اور میرے خلاف غلیظ زبان استعمال کرتے رہے، خالد وڑائچ نے مزید کہا اس کی انکوائری اعلی سطح پر کرواکر اصل حقائق منظر عام پر لاکر ذمہ داروں کے خلاف کارروائی عمل میں لائی جائے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں