20

بلاتاخیر صوبہ سرائیکستان کا قیام عمل میں لایا جائے،رانا محمد فراز نون

ملتان(سٹاف رپورٹر)سرائیکی تحریک کو اپنی منزل صوبہ سرائیکستان سے ہٹایا نہیں جا سکتا،سرائیکی پر امن قوم ہے،گھٹیا زبان برداشت نہیں کریں گے،سرائیکی وسیب کی خودار اور محنتی عوام کو بھکاری کہنے پر جنرل (ر) اعجاز معافی مانگیں،ان خیالات کا اظہار چیئرمین سرائیکستان ڈیموکریٹک پارٹی رانا محمد فراز نون، عنایت اللہ مشرقی اور نذیر احمد کٹپال نے مشترکہ بیان میں کیا،انہوں نے کہا کہ سرائیکی قوم اداروں اور شخصیات کا احترام کرتی ہے لیکن اس کا یہ مطلب نہیں کہ جس کا جو دل چاہے اُٹھ کر سرائیکی خطے پر گھٹیا لفظوں کے وار کردے،سرائیکی با شعور قوم سرائیکی خطے کی عوام ملک و قوم کی بہتری میں اہم کردار ادا کر رہی ہے،سرائیکی خطے کی عوام نے وطن عزیز کی خاطر ڈھیروں قربانیاں دی ہیں، ریٹائرڈ جنرل نے سرائیکی قوم کیلئے وہی الفاظ استعمال کئے جو بنگالیوں کے خلاف کئے جاتے تھے،ان الفاظ کی جتنی مذمت کی جائے کم ہے،جنرل (ر) اعجاز اُٹھ کر انہیں بھکاری کہہ دیں تو یہ نا قابل برداشت ہے،جنرل (ر) اعجاز کے جاری کردہ بیان کے بعد سرائیکی قوم میں سخت غم و غصہ پایا جاتا ہے،جنرل (ر) اعجاز سرائیکی قوم سے معافی مانگیں نہیں تو پورے وسیب میں احتجاجی مظاہرے کریں گے،سرائیکی پر امن قوم، سرائیکی تحریک پر امن کام کر رہی ہے،لیکن سرائیکی خطے کی عوام کو بھکاری کہنا برداشت نہیں کریں گے کہ سرائیکی وسیب پورے پاکستان میں سب سے زیادہ خوراک پیدا کرنے والا خطہ ہے اور پاکستان کے دیگر صوبوں کو خوراک بھی اسی خطے سے جاتی ہے۔ محنت، مزدوری کرنے والوں پر انگلی اٹھانا نا قابل برداشت عمل ہے،انہوں نے کہا کہ جو لوگ سرائیکی خطے کی عوام کو بھکاری کہتے ہیں،وہ تاریخ کے آئینے میں اپنی شکل دیکھیں، وسیب کی محرومی کے اصل مجرم حکمران ہیں،وسیب میں خام مال اور افرادی قوت کی فراوانی کے باوجود ایک بھی ٹیکس فری انڈسٹریل زون نہیں لگایا گیا،وسیب کے وسائل بے دردی سے لوٹے جارہے ہیں،انہوں نے کہا کہ بلاتاخیر صوبہ سرائیکستان کا قیام عمل میں لایا جائے کہ سرائیکی قوم کو شناخت دی جائے اور ان کیخلاف بد زبانی کرنے والوں کے منہ بند کئے جائیں۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں