8

بھٹہ مالکان کی قید سے بازیاب ہونے والا 14 سالہ لڑکا والدین کے حوالے

ملتان(سٹاف رپورٹر)عدالت عالیہ ملتان بینچ کے مسٹر جسٹس علی ضیا باجوہ نے بھٹہ مالکان کی قید سے برآمد ہونے والے 14 سالہ لڑکے کو اس کے والدین کے حوالے کردیا ہے،عدالت عالیہ نے لڑکے کے والد کو ہدایت کی ہے کہ اگر وہ چاہے تو بھٹہ مالکان کے خلاف پولیس سے مقدمہ کیلئے رجوع کر سکتا ہے،عدالت عالیہ میں پولیس کے ذریعے برآمد ہو کر پیش ہونے والے نوجوان لڑکے وقاص نے عدالت کو آگاہ کیا کہ اس سے سارا دن مزدوری کرائی جاتی اور کھانے کو ایک وقت سوکھی روٹی دی جاتی تھی،اگر احتجاج کیا جاتا آتا تو اسے تشدد کا نشانہ بھی بنایا جاتا تھا، اس سے قبل عدالت عالیہ میں حبس بے جا کی رٹ درخواست دائر کرتے ہوئے محمد نواز کی جانب سے انسانی حقوق کمیشن کے فیصل محمود تنگوانی اور محمد حسین کھوکھر نے موقف اختیار کیا کہ وہ خانیوال کا رہائشی ہے بھٹہ مالکان ججی شاہ اور رمضان نے اس کے بیٹے 14سالہ وقاص کو گزشتہ ایک ماہ سے زبردستی اغواء کیا ہوا ہے اور رہائی کے عوض تین لاکھ روپے مانگ رہے ہیں،عدالت عالیہ سے استدعا ہے کہ اس کے بچے کو برآمد کرایا جائے،گزشتہ روز بیٹے کی برآمدگی کے بعد محمد نواز نے اپنے وکیل فیصل محمود تنگوانی اور محمد حسین کھوکھر کے ہمراہ پریس کانفرنس کی،اس پریس کانفرنس کے دوران انہوں نے کہا کہ انسانی حقوق کمیشن نے ان کی مفت قانونی امداد کی ہے،اس پر میں ان کا بھی مشکور ہوں کہ عدالت عالیہ نے ان کے بے گناہ بیٹے کو برآمد کر آیا ہے،میں اس فیصلے کا خیر مقدم کرتا ہوں۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں