30

تحریر محمد عباس ساجد مرکزی چیرمین پاکستان فیڈرل اتحاد یونین اف جرنلسٹ ……………………………………………………………………عنوان حقیقت پاکستان کے ہیرو تاریخ کے آئینہ میں

‏1947:قائداعظم نےپاکستان کی بنیاد رکھی۔
1948:وہ خراب ایمبولنس میں وفات پاگئے۔
1947:امیرالدین قدوائی نےقومی پرچم ڈیزائن کیا۔
2019:اسکے بےقصورپوتےنے 20 ماہ NAB ٹارچر سیل میں کاٹے۔
1906:نواب محسن الملک نےمسلم لیگ کی بنیادرکھی۔
1960:اسکے نواسےکوجنرل ایوب نےازیتیں دیکرماردیا۔
‏1921:حسرت موہانی مسلم لیگ کے13ویں صدربنے۔
1995:اسکے پوتےکودہشتگردقراردیکرماردیاگیا۔
1948:فاطمہ جناح نےآزادئ کشمیر کیلئےپیسےدیئے۔
1964:مس جناح کوغدارقراردیاگیا۔
1949:احمدچھاگلہ نےقومی ترانےکی دھن مرتب کی۔
1979:اسکے خاندان کوضیادورمیں ملک چھوڑنا پڑا۔
‏1949:رعنالیاقت نے”ویمن نیشنل گارڈ”کی بنیادرکھی۔
1951:رعنالیاقت کوطوائف قراردیاگیا۔
1940:فضل حق نےقراردادپاکستان پیش کی تھی۔
1954:فضل حق غدار قرارپائے۔
1947:سر شاہنوازبھٹونےجوناگڑھ کاپاکستان سےالحاق کروایا۔
1979:انکے بیٹےکوپھانسی اورپوتی کوقتل کردیا۔
‏1947: KH خورشیدنےالحاق کشمیرکیلئےکوشش کی۔
1965: خورشیدکوسڑک پرگھسیٹا گیا۔جیل بھی کاٹی۔
1947:لیاقت علیخان پہلےوزیراعظم منتخب ہوئے۔
1951: اسے بےدردی سےقتل ہوئے۔انکوائری رپورٹ جل گئی۔
1947:قیام پاکستان کےبعدخواجہ ناظم الدین مسلم لیگ کےپہلےصدربنے۔
1964:خواجہ صاحب غدارقرارپائے۔
‏1947: سردارابراھیم نےالحاق پاکستان کی مہم چلائی۔
2009:انکےبیٹےغدارقرارپائے۔
باچا خان نے تحریک آزادی اور خدائی خدمتگارئ تحریک کےلئے 36 سال جیل میں گزاریں لیکن بعد میں غدار قرار دیئے گئے۔
1943:جی ایم سیدسائیں نےقراردادلاھورسندھ اسمبلی میں پیش کی۔
1948:سیدسائیں غدارقرارپائے۔
1947:شیخ مجیب نےمسلم سٹوڈنٹ لیگ کی بنیادرکھی۔
1971:شیخ مجیب کوغدارقراردیاگیا۔

1973 میں ذولفقارعلی بھٹو، ولی خان اور مفتی محمود نے پاکستان کے لئے آئین بنایا جبکہ بعد میں بھٹو کو پھانسی اور ولی خان اور مفتی محمود کو الزامات کی بنیاد جعلی کیسس بنوا کر جیل بیھجا گیا۔
‏1940:بیگم سلمی تصدق نےلیگ کیلئےمہم چلائی۔
1960:اسے ایوب خان نےکرپٹ قراردیکرنااہل کردیا۔
1946:افتخارالدین نےمسلم گارڈکیلئےآبائی گھرمختص کیا۔
1960:ایوب خان نےافتخارالدین کوکرپٹ قراردیا۔
1946:سیھروردی نےمسلم گارڈکیلئےٹرینگ سنٹربنایا۔
1960:حسین سھروردی شھید بھی غدارقرارپائے۔
‏1945:والئی قلات احمدیار نےقائداعظم کوسونے اورچاندی میں تولا۔
2006:اسکے پوتےکوجان بچانےکیلئےملک چھوڑناپڑا۔
1933:چودھری رحمت علی نےپاکستان کانام رکھا۔
1951: انکابھی سامان ضبط کرکےجلاوطن کردیاگیا۔
1939:قاضی عیسی نےبلوچستان مسلم لیگ کی بنیادرکھی۔
2019:انکےبیٹےکوغدارقراردیاگیا۔
قدیر خان نے ملکی دفاع کے لئے ایٹم بم بنایا جبکہ آج سڑکوں پر مارے مارے پھیر رہاہے۔
نواز شریف نے ملک کو موٹر وے اور بم دھماکے کئے لیکن آج چور بن کر بیرونی ملک میں زندگی گزارنے پر مجبور ہے۔
بے نظیر نے جمہوریت کی نحالی اور ڈکٹیٹر شپ کو ختم کرنے کے لئے بہادری کا مظاہرہ کیا لیکن ان پر دھماکہ کر کے ہمیشہ کے لئے خاموش کردیا۔
آج عمران خان ہیرو ہے پتہ نہیں کل انکا کیا حشر ہوگا۔
اللہ ہمارے ملک پر رحم کریں۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں