15

جو پاکستان بننے جارہا ہے ہم غریب ملکوں کوامداد دیا کرینگے،وزیراعظم عمران خان

آزاد کشمیر(بیورو رپورٹ)وزیراعظم عمران خان نے کہا ہے کہ جو پاکستان بننے جارہا ہے ہم غریب ملکوں کوامداد دیا کریں گے،آزاد کشمیر میں انتخابی مہم کے جلسے سے خطاب کرتے ہوئے وزیراعظم کا کہنا تھا کہ غریب خاندان علاج کرانے کے لیے ہرچیزبیچ دیتا ہے، ہیلتھ کارڈ سے کسی بھی ہسپتال سے مفت علاج کرایا جاسکتا ہے، ہم بھی فلاحی ریاست کی کوشش کر رہے ہیں،وزیراعظم ہم نے خیبرپختونخوا میں تمام شہریوں کوہیلتھ کارڈ دیئے،وزیراعظم سال کے آخرتک تمام کشمیریوں کوہیلتھ انشورنس دیں گے،انہوں نے کہا کہ طاقت ورکوقانون کے نیچے لانے کی کوشش کررہے ہیں، ہم اپنے ملک کے مستقبل کی جنگ لڑرہے ہیں، بدقسمتی سے کبھی اپنے پاؤں پرکھڑا ہونے کی کوشش نہیں کی، قرضے لیکرگزارہ کرتے ہیں، کوئی بھی ملک ہاتھ پھیلا کرعظیم قوم نہیں بن سکتی، جوپاکستان بننے جارہا ہے ہم غریب ملکوں کوامداد دیا کریں گے،اپنی بات کو جاری رکھتے ہوئے وزیراعظم کا کہنا تھا کہ کیا کسی نے برطانیہ میں دیکھا طاقت ورڈاکوپکڑا جائے اورجرات ہے این آراومانگے؟ کسی خوشحال ملک میں این آر او مانگنے کی جرات نہیں ہوتی، جیلوں میں صرف غریب لوگ ہے، طاقت ور کو ہمارا انصاف کا نظام نہیں پکڑ سکتا، کبھی ایسا نہیں ہوتا جھوٹے ٹیسٹ دکھا کرایکٹنگ کرکے ملزم برطانیہ میں چلا جائے، جس ملک میں قانون سب کے لیے برابروہ خوشحال ہے،عمران خان کا کہنا تھا کہ جن قوموں میں انصاف نہ ہووہ تباہ ہوجاتی ہیں، کفرکا نظام چل سکتا ہے ظلم کا نہیں، جب قوم میں انصاف نہ ہوتوقوم کبھی ترقی نہیں کر سکتی، بڑے،بڑے ڈاکوصرف این آراومانگ رہے ہیں، یہ چاہتے ہیں ان کے گناہ معاف کردوں،ان کا کہنا تھا کہ مدینہ کی ریاست کا ماڈل تحریک انصاف اپنارہی ہے، پناہ گاہوں میں مزدورطبقے کومفت کھانا دیا جاتا ہے، مدینہ کی ریاست میں سب سے پہلے انسانیت تھی، چین نے مدینہ کا ماڈل اپنا کر ستر کروڑ لوگوں کو غربت سے نکالا، سمجھ لیں انصاف کے نظام کے بغیرکوئی قوم اوپرنہیں جاسکتی، ہمارے نبی نے کہا میری بیٹی بھی قانون سے بالاترنہیں ہے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں