11

خاتون اور دبئی پلٹ نوجوان کی گلے میں رسی ڈال کر خود کشی

رحیم یارخان ،گھلواں،گھریلو ناچاقی،غربت خاتون اور دبئی پلٹ نے خود کشی کرلی،تفصیل کے مطابق بستی بخشن خان موضع مصائب لولائی کی رہائشی 35سالہ عذرا بی بی نے گھریلو ناچاقی کے باعث دلبرداشتہ ہوکر گلے میں پھنداڈال کر پنکھے سے لٹک کر خودکشی کرلی، اطلاع ملنے پر پولیس نے موقع پر پہنچ کر تحقیقات کے بعد واقعہ کو اقدام خودکشی قرار دیتے ہوئے نعش تدفین کے لئے ورثاء کے حوالے کردی،جبکہ گھلواں میں مظہر حسین جو کہ دبئی میں اونٹوں کی دیکھ بھال کرکے اپنے بچوں کا پیٹ پالتا تھا کرونا اور دبئی میں مالی حالات ٹھیک نہ ہونے کی وجہ سے نوکری سے نکال دیا گیا چھ ماہ سے اپنے گھر میں مقیم تھا ادھر کوئی ذریعہ معاش نہ ہونے کی وجہ سے سارا دن اپنے گھر میں سویا رہتا تھا ذہنی دباؤ کی وجہ سے اپنے گھر کے کمرے میں پھندا سے لٹک کر اپنی زندگی کا خاتمہ کرلیا گھر والوں کا کہنا تھا کہ جس وقت اس نے خودکشی کی اس وقت سب گھر والے شادی پرگئے ہوئے تھے،جب واپس آئے تو مظہر حسین کو پھندے سے لٹکا ہوا پایا لاش کو اتار کر موقع پر 15 پر کال کر دی ایس ایچ او صدر الیاس خان بھاری نفری کے ساتھ موقع پر پہنچ کر ابتدائی تفتیش کے بعد لاش کو پوسٹ مارٹم کے لیے بھجوا دیا گیا،ظاہرپیرمیں ورثا اور عینی شاہدین کا کہنا ہے کہ متوفیہ کا گھر والا شراب کے نشے میں دھت ہوکر روزانہ مار پیٹ کرتا تھا جبکہ ہمسائیوں کا یہ بھی کہنا تھا کہ متوفیہ کا گھر والا بیوی کے منہ پر گرم استری تک رکھ دیتا تھا،مقتولہ کے ورثا نے الزام عائد کیا ہے کہ تھانہ ظاہر پیر کی پولیس ملزمان سے ساز باز کر کے قتل کو خودکشی کا رنگ دینے کی کوشش کر رہی ہے مقتولہ کے والد کا کہنا ہے کہ میری بیٹی پر اس کا شوہر ہر وقت ظلم و تشدد کرتا تھا جبکہ گھریلو ناچاقی کی وجہ سے خاتون نے خودکشی کی یا اس کا قتل کیا گیا دونوں ہی صورتوں میں میری بیٹی کے شوہر پر قتل کا مقدمہ درج کیا جائے جبکہ ورثا نے الزام عائد کیا ہے کہ متوفیہ خاتون کا شوہر نشے میں دھت تھا جس کو پولیس نے حراست میں لینے کی بجائے اس کو چھپ جانے کا مشورہ دیا۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں