17

خانیوال،احساس سنٹر میں لڑائی جھگڑا معمول، پولیس، ٹائیگرفورس کا خواتین پر تشدد

خانیوال،احساس کفالت سنٹر خانیوال کرپشن کا گڑھ بن گیا،لڑائی جھگڑے کے واقعات معمول بن گئے،مبینہ ٹائیگر فورس کے نوجوان کا خاتون پر بہیمانہ تشدد،احساس کفالت سنٹر میں جھگڑے کی ویڈیو سوشل میڈیا پر وائرل،تھانہ سٹی خانیوال نے ملنے والی درخواستوں کی روشنی میں تحقیقات شروع کر دی مگر تاحال کوئی مقدمہ درج نہ کیا جا سکا،تفصیل کے مطابق احساس کفالت سنٹر خانیوال میں آئے روز خواتین کے ساتھ بدتمیزی اور لڑائی جھگڑے کے واقعات معمول بن گئے ہیں احساس کفالت سنٹر پر آنے والی خواتین کے ساتھ بدتمیزی بھی معمول کا حصہ بن چکی ہے احساس کفالت سنٹر پر سکورٹی نام کی کوئی چیز نہیں جس کی وجہ سے احساس کفالت سنٹر خانیوال میدان جنگ بن گیا،ڈنڈوں سوٹوں سے ایک دوسرے پر لوگ حملہ آور ہو گئے،جبکہ انتظامیہ اس تمام واقعہ کو کنٹرول کرنے میں مکمل ناکام رہی مبینہ طور پر ٹائیگر فورس کے نوجوانوں نے وہاں پر موجود خواتین کو تشدد کا نشانہ بنایا،جس کے بعد خواتین کے ہمراہ آنے والے مرد بھی احساس کفالت سنٹر پہنچ گئے اور جھگڑا شروع ہوگیا،جھگڑے کی ویڈیو سوشل میڈیا پر وائرل ہوگئی،تھانہ سٹی خانیوال میں واقعہ کی دو مختلف درخواست دے دی گئیں،مگر افسوس ناک امر یہ کہ تھانہ سٹی خانیوال پولیس نے کسی کے خلاف ابھی تک تاحال کوئی کارروائی نہ کی‘نہ ہی کوئی مقدمہ درج کیا،اس حوالے سے ایسی خانیوال بختیار اسماعیل سے بار بار رابطہ کی کوشش کی گئی انہیں میسج بھی کیا گیا مگر انہوں نے جواب نہ دیا،قصبہ بصیرہ سے بھی شاہ جمال احساس کفالت سنٹر پر تھانہ شاہ جمال کے سب انسپکٹر شاہد کی موجودگی میں لیڈی کانسٹیبل ارم اور فیاض کانسٹیبل ہر روز خواتین پر تشدد کا نشانہ بناتے ہیں،ایک اور خواتین پر تشدد کا نشانہ بنایا جس کو کمرے میں بند کر کے دو گھنٹے تک تشدد کرتے رہے،تھانہ شاہ جمال کی پولیس اپنی وردی کا ناجائز فائدہ اٹھاتے ہوئے ریٹیلر کو دھمکیاں دے کر اپنے ذاتی خواتین کو اندر داخل کرتے ہیں جن کے ریٹیلر پیسے نکالتے ہیں اگر کوئی خواتین حق کی بات کرے تو اسے تشدد کا نشانہ بناتے ہیں،کوٹلہ مغلاں میں بھی احساس کفالت سنٹروں پر لوٹ مار جاری فی خواتین سے پانچ سو سے ایک ہزار تک سرعام کٹوتی پرانتظامیہ خاموش ہے،ریٹیلرز نے کرپشن کا نیا طریقہ بھی متعارف کروا دیا پیسے دیتے وقت ویڈیو بنا لیتے ہیں جب ویڈیو بن جائے پھرپیسے بٹور لیتے ہیں متعدد خواتین کی اسسٹنٹ کمشنر جامپور کو شکایت لیکن کوئی ایکشن نا ہوسکا،ظاہر پیر میں احساس کفالت سنٹر ترنڈہ محمد پناہ کے باہر ٹاؤٹ مافیا کاراج ہے،مبینہ فی مستحق سے 2000سے 3000روپے تک معاملات طے ہونے لگے‘ کا بھی شدید فقدان‘پینے کا صاف پانی بھی ندارد‘شدید گرمی اور دھوپ کے باوجود روزانہ سیکڑوں مستحق خواتین گھروں کو مایوس لوٹنے لگیں‘انٹرنیٹ پرابلم کے باعث ٹرانزیکشن کی خرابی بھی روز کا معمول‘عوامی و سماجی حلقوں نے فوری ایکشن کا مطالبہ کیا ہے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں