8

خواجہ فرید یونیورسٹی کے گرد غیرقانونی ہاسٹلز کی بھرمار‘ بغیر اندراج رہائشیں

رحیم یارخان ( کرائم رپورٹر) خواجہ فرید آئی ٹی یونیورسٹی کے ارد گرد غیرقانونی ہاسٹل کی بھرمار، زرعی زمینوں کو ختم کرکے کمرشل پلازے تعمیر ہونے لگے، غیر قانونی ہاسٹل میں طلباء بغیر کسی اندراج کے رہائش پذیرہونے کاانکشاف، ان نجی ہاسٹل کااندراج مقامی تھانوں اورسیکورٹی اداروں کے پاس بھی موجود نہیں۔ ہاسٹل میں رہنے والے طلباء لڑائی جھگڑوں میں بھی ملوث ہیں۔ اسپیشل برانچ کی جانب سے اعلیٰ حکام کو ارسال کی جانیوالی رپورٹ میں انکشاف ہوا ہے کہ خواجہ فرید آئی ٹی یونیورسٹی کے اردگرد غیرقانونی ہاسٹل کی بھر مار ہوچکی ہے، یونیورسٹی کے ارد گرد زرعی زمینوں کوختم کرکے غیرقانونی کمرشل پلازے تعمیر کیئے گئے ہیں، کمرشل پلازوں اور غیر قانونی ہاسٹل میں رہائش پذیر طلباء کے بغیر کسی اندراج کے رہنے کاانکشاف بھی کیا گیا ہے۔ جبکہ ان نجی ہاسٹل کا اندراج نہ تو مقامی پولیس کے پاس موجود ہے اورنہ ہی سیکورٹی اداروں کے پاس، ان ہاسٹل میں رہائش پذیر طلباء زیادہ تر لڑائی جھگڑوں میں ملوث ہیں۔ جس کے باعث خواجہ فرید آئی ٹی یونیورسٹی میں کوئی بھی بڑا ناخوشگوار واقعہ پیش آسکتاہے۔ رپورٹ میں مزید تحریربیان کیا گیا غیرقانونی ہاسٹل اورکمرشل سینٹر کے باعث سیکورٹی خدشات میں بے پناہ اضافہ ہوچکاہے۔ رپورٹ میں فوری طور پر غیرقانونی ہاسٹل اور پلازوں کی تعمیر پر فوری ایکشن لینے کی ضرورت پر زور دیاگیا ہے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں