12

دہشت گرد تنظیموں پر مکمل پابندی ہونی چاہئے،یوسف رضا گیلانی

ملتان(سٹاف رپورٹر)سابق وزیراعظم و اپوزیشن لیڈر سید یوسف رضا گیلانی نے کہا ہے کہ پاکستان پیپلز پارٹی پہلی جماعت ہے جس نے سینٹرل ایگزیکٹو کمیٹی کا اجلاس کرکے افغانستان کی موجودہ صورتحال پر شدید تشویش کا اظہار کیا،پاکستان پیپلز پارٹی نے تشویش کا اظہار کرتے ہوئے کہا ہے کہ افغانستان میں کثرت پسندانہ گورنمنٹ ہونی چاہئے تاکہ نمائندہ لوگ اقتدار میں شامل ہوں،پارٹی نے انسانی حقوق، اقلیتوں، خواتین کے حقوق کی بھی بات کی ہم نے مذہبی تہوار کے موقع پر طالبان سے مطالبہ کیا کہ ان کی آزادی کو یقینی بنایا جائے،سید یوسف رضا گیلانی نے کہا کہ طالبان نے اس رویہ کا اظہار کیا مستقبل میں بھی ایسا رویہ رکھنا ہوگا،افغانستان کی صورتحال پر ہمیں من حیث القوم فیصلہ کرنا ہوگا کہ خانہ جنگی ہوئی تو علاقائی ملکوں سے زیادہ پاکستان متاثر ہو گا ہمارے افغانستان سے ہمسائیگی، مذہبی، سیاسی، ثقافتی اور جغرافیائی تعلقات ہیں ہم سمجھتے ہیں کہ دوسرے لوگ آتے جاتے رہیں گے مگر ہم ہمسائیگی کی وجہ سے یہاں زندگی بھر رہنا ہے ہمارے لئے افغانستان جڑواں بھائی کی حیثیت رکھتا ہے ہمارے مفاد میں آزاد،خود مختار، خوشحال، مضبوط اور پرامن افغانستان پاکستان کے مفاد میں ہے حکومت کو سنجیدگی کا مظاہرہ کرتے ہوئے بدلتے ہوئے حالات کا جائزہ لینا چاہیئے خطے اور بین القوی کمیونٹی کے رابطہ میں رہے کہ ایک مضبوط اور دیرپا فیصلہ کرنا چاہئے، انہوں نے کہا کہ دہشت گرد تنظیموں پر مکمل پابندی ہونی چاہئے اور کسی کی سرزمین کسی کے خلاف استعمال سے گریز ہوناچاہئے، اس موقع پر سید یوسف رضا گیلانی نے مشترکہ پارلیمنٹ کے اجلاس کا مطالبہ بھی کیا.

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں