14

سرکاری اراضی پر قبضہ،تھانہ جلہ پولیس نے ملزم پکڑ کر چھوڑ دیا

بستی ملوک،سیاسی پشت پناہی پر تھانہ جلہ آرائیں پولیس 370ڈبلیو بی میں قبضہ مافیا کی سرپرست بن گئی،چوکی انچارچ شاہد نے قبضہ مافیا کے خلاف 15کی کال پر ایک شخص کو گرفتار کیا،لیکن چوکی پہنچنے سے پہلے ہی اپنے سیاسی آقاہ کے حکم پر گرفتار ملزم صداقت علی کو چھوڑ دیا جس پر قبضہ مافیا نے پھر سے سرکاری جگہ پر قبضہ شروع کردیا دوبار 15کی کال پر چوکی انچارج موقع پر پہنچنے کی بجائے ٹال مٹول سے کام لیتا رہا اہلیان علاقہ مدثر شاہ ,بدر شاہ ودیگر نے پولیس کے خلاف سخت احتجاج کرتے ہوئے بتایاکہ سابق تحصیلدار ملک الطاف کی سرپرستی میں پہلے بھی قضبہ مافیا لیاقت علی نے سرکاری رقبہ پر قبضہ کرنے کی کوشش کی تھی جس پر سابق اسسٹنٹ کمشنر دنیا پور سید وسیم حسن نے ایکشن لیتے ہوئے 32,34کی کاروائی کی اور سرکاری رقبہ چراگاہ,سرکاری ہسپتال و قبرستان کی زمین کو واگزار کروایا اب کچھ عرصہ بعد پھر سے لیاقت علی نے سید مدثر کے ملکیتی پلاٹ سمیت سرکاری زمینوں پر سیاسی آشیرباد سے قبضہ کرنے کی کوشش کی سرکاری رقبہ پر پختہ تعمیرات کی جارہی ہیں تھانہ جلہ پولیس نے لیاقت علی کوموقع سے گرفتار کیا لیکن پھر سیاسی حکم پر چھوڑا دیا چوکی انچارج نے اس بارے موقف دیا ہے کوئی شخص گرفتار ہی نہیں کیا گیا تھا۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں