18

سینیٹ کی قائمہ کمیٹی برائے خزانہ کا اجلاس،کسٹم کلکٹر کو فنانس بل میں اختیارات پر تحفظات کا اظہار

اسلام آباد،سینیٹر طلحہ محمود کی زیر صدارت سینیٹ کی قائمہ کمیٹی برائے خزانہ کا اجلاس منعقد ہوا،کمیٹی نے کسٹم کلکٹر کو فنانس بل میں اختیارات پر تحفظات کا اظہار کردیا،کسٹم کلکٹر کسی بھی معاملہ پر سوموٹو یا پھر سپریم کورٹ تفویض اختیارات استعمال کرسکتا ہے،سینیٹر فاروق ایچ نائیک نے کمیٹی معاملہ کل تک کیلئے موخر کردیا،سیکرٹری سرمایہ کاری بورڈ سے چیئرمین کمیٹی نے سی پیک منصوبہ سے متعلق سوال کردیا،سیکرٹری سرمایہ کاری بورڈ کا کہنا تھا کہ خصوصی اقتصادی زونز میں سرمایہ کاری کیلئے چین نے اپنی کمپنیوں کو قائل کرنا تھا،ابھی تک کوئی بھی چینی کمپنی سرمایہ کاری کیلئے نہیں آئی، سیکرٹری سرمایہ کاری بورڈ نے مزید کہا کہ خصوصی اقتصادی زونز میں پلانٹ اور مشینری ڈیوٹی فری درآمد کی جاسکتی ہے،زونز انٹرپرائزز اور ڈویلپرز کو 10 سال کی انکم ٹیکس چھوٹ دی گئی ہے،سنیٹر سلیم مانڈوی والا نے کہا کہ سپیشل ٹیکنالوجی زون میں خام مال اور مشینری کی درآمد ڈیوٹی فری کی جاسکتی ہے،خصوصی اقتصادی زونز کو یہ مراعات حاصل نہیں ہیں،چیئرمین سرمایہ کاری بورڈ نے استعفی دیدیا ہے،سیکرٹری سرمایہ کاری بورڈ نے کہا کہ استعفی کی منظوری کابینہ دے گی،سینیٹر سلیم مانڈوی والا نے سوال کیا کہ کیا یہ اس حکومت کے چوتھے چیئرمین سرمایہ کاری بورڈ ہیں،سیکرٹری سرمایہ کاری بورڈ نے جواب دیا کہ اس حکومت کے تیسرے چیئرمین سرمایہ کاری بورڈ نے استعفی دیا ہے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں