12

عباسیہ کیمیس کو سیکرٹریٹ بنانے کیخلاف مظاہرے،کمشنر،آر پی او ودیگر بیورو ہائوسسز کو سیکرٹریٹ بنائیں،ذیشان اختر

بہاول پور،اسلامیہ یونیورسٹی عباسیہ کیمپس کو جنوبی پنجاب سیکرٹریٹ میں تبدیل کرنے کے ممکنہ فیصلے کے خلاف جماعت اسلامی کی یونیورسٹی کے مرکزی گیٹ کے سامنے احتجاجی کیمپ لگایا گیا ،احتجاجی کیمپ میں نائب امیر جنوبی پنجاب سید ذیشان اختر نے پرہجوم پریس کانفرنس میں عباسیہ کیمپس کوسیکرٹریٹ میں تبدیل کرنے کی گھناؤنی سازش کی شدید مذمت کرتے ہوئے کہا کہ یونیورسٹی اہلیان بہاول پور کا دل ہے اور حکمران سن لیں بہاول پور کوئی لاوارث شہر نہیں ہے بہاول پور کی تاریخی مادر علمی کو سیکرٹریٹ میں تبدیل کرنے کی کوشش کی گئی تو جماعت اسلامی بہاول پور کی عوام کے ساتھ مل کر تحریک چلائے گی اگرسیکرٹریٹ بنانا ہے تو ایکڑوں پر محیط کمشنر ہاؤس، آر پی او ہاؤس اور دیگر بیوروکریسی کے ہاؤسز میں بنائیںاسلامیہ یونیورسٹی کی جانب کسی نے آنکھ اٹھا کر دیکھا تو سخت مذاحمت کا سامنا کرنا پڑے گا ۔انہوں نے کہا کہ عمران خان نے وزیر اعظم بننے سے قبل بہاول پور میں آکر بہاول پور صوبہ 100دن میں بحال کرنے کا وعدہ کیا تھا مگر حکومت میں آنے کے بعد وہ دیگر تمام وعدوں کی طرح بہاول پور کی عوام کو ان کا حق دینا بھول گئے جب یہ حکومت ہمیں ہمارا حق نہیں دیتی تو کس منہ سے ہماری قسمت کے فیصلے کرتی ہے ْ۔دریں اثناء اسلامیہ یونیورسٹی کے عباسیہ کیمپس کو بہاولپور سول سیکرٹریٹ میں تبدیل کرنے کا معاملہ جامعہ کے اسلامی جمعیت طلبا ء کاحکومتی فیصلوں کے خلاف یونیورسٹی چوک پر شدید احتجاج اور نعرے بازی کی،احتجاجی مظاہرے کی قیادت عبداللّہ عزام قائم مقام ناظم اسلامی جمعیت طلبہ بہاول پور اور الیاس بلوچ قائم مقام ناظم اسلامیہ یونیورسٹی نے کرتے ہوئے اپنے خطاب میں کہا کہ حکومتی دعوے تو تھے سیاسی رہائش گاہوں کو تعلیمی اداروںمیں بدلنے کے مگر عملی اقدام بالکل الٹ ہے یہ حکمران تو تعلیمی اداروں کو اپنے سیاسی مفادات کے بھینٹ چڑھانا چاہتے ہیں مگر یہ سن لیں اگر حکومت اپنا فیصلہ واپس نہیں لیتی تو ہم دھرنا دینگے اور بھوک ہڑتال کرینگے ہم اپنی مادر علمی کے ساتھ یہ کھلواڑ نہیں کھیلنے دیں گے ۔ ادھر سیشعبہ قانون اسلامیہ یونیورسٹی بہاولپور کے طلباؤطالبات نے تیسرے روز روز بھی عباسیہ کیمپس کو جنوبی پنجاب سیکریٹیریٹ میں تبدیل کرنے کے منصوبے کے خلاف یونیورسٹی چوک میں احتجاج کیا۔ان طلباوٗطالبات کا کہنا تھا کہ بغدادالجدید کیمپس میں اور ریلوے کیمپس میں شعبہ قانون منتقل کرنے کیلئے کوئی متبادل عمارت نہ ہے۔ اسی طرح جنرل پوسٹ آفس کے بالمقابل یونیورسٹی کا سب آفس پہلے ہی جنوبی پنجاب انتظامیہ کے کنٹرول میں ہے حکومت کی جانب سے عباسیہ کیمپس کو جنوبی پنجاب سیکرٹریٹ میں تبدیل کرنے کا فیصلہ واپس نہ لیا گیا تو طلباوٗ طالبات کوئی بھی قدم اٹھانے سے گریز نہیں کریں گے ۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں