37

فراڈ میں” ذہین “کنول کی ٹھگیاں،پارٹی عہدیداروں سے لاکھوں بٹور لئے

ملتان(سٹاف رپورٹر)تحریک انصاف شعبہ خواتین کی ضلعی صدر کا اپنی ہی پارٹی کی عہدیداروں سے مالی فراڈ منظر عام پر آگیا،این جی او کی آڑ میں ضلعی صدر ذہین کنول نے سادہ لوح سے لوٹ مار جاری کررکھی ہے ،معاملات پارٹی قیادت کے سامنے آنے پر بھی ایکشن نہ لیا گیا،اس سلسلہ میں اپنی ہی پارٹی کی ڈپٹی جنرل سیکرٹری شعبہ خواتین ملتان ذکیہ بی بی (ملک) کے ذریعے جلال پور پیروالا کی درجنوں خواتین کو یونائٹیڈ ہیومن رائٹس کمیشن پنجاب کی صدر بن کر سلائی مشینوں اور بیوٹی پارلر کے سامان سمیت ممبر شپ کے نام پر لاکھوں روپے کا فراڈ کیا،جبکہ متعدد حضرات و خواتین کو این جی او اور پی ٹی آئی کے عہدوں کا نوٹیفکیشن دینے کے وعدے پر تین ہزار سے دس ہزار فی کس وصول کئے،کئی ماہ بعد بھی سامان اور نوٹیفکیشن جاری نہ ہونے پر جلال پورپیروالا کے لوگ ذکیہ ملک کے پاس پہنچے،اس کے باوجود ذہین کنول نے دادرسی نہ کی،ذہین کنول نے یونائٹیڈ ہیومن رائٹس کمیشن کا نائب صدر پنجاب ذکیہ ملک کو منانے کیلئے پانچ ہزار کامران ولد نذیراحمد سے تین ہزار،شاکر سے دس ہزار روپے جبکہ 6ماہ قبل جلال پور پیروالا کی خواتین سے سلائی سنٹرز اور بیوٹی پارلر کے قیام اور ٹول کٹس دینے کیلئے چھیانوے ہزار وصول کئے،6 ماہ گزرنے کے باوجود نہ تو عملی اقدامات کئے نہ ہی لوگوں کے پیسے واپس کئے، اس حوالے سے ڈپٹی جنرل سیکرٹری پی ٹی آئی شعبہ خواتین ملتان ذکیہ ملک کو رقم واپسی کے مطالبہ پر سنگین نتائج کی دھمکیاں دیں۔دو ماہ قبل معاملہ صدر جنوبی پنجاب شعبہ خواتین ڈاکٹر روبینہ تک پہنچا تو ضلعی صدر ذہین کنول نے ان کے سامنے رقم وصول کا اعتراف کرتے ہوئے واپس کرنے کا وعدہ کیا جو آج تک ایفا نہیں ہوسکا،ذکیہ ملک کے بقول پارٹی عہدیداروں سے انصاف کی استدعا کی تو انہوں نے خاموشی اختیار کرلی،جس پر وہ دوبارہ ڈاکٹر روبینہ کے پاس گئے،تاہم آج تک ایکشن نہیں کیا جاسکا ۔اس حوالے سے ضلعی صدر ذہین کنول سے موقف جاننے کیلئے رابطہ کیا تو ان کا فون متواتر مصروف تھا۔انہوں نے واپسی فون بھی نہیں کیا۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں