31

قبضہ مافیا کے سرغنہ (ن) لیگ کے سابق ایم پی اے میاں شہزاد مقبول بھٹہ

ملتان
قاسم بیلہ کے علاقہ موضع محمد پور گھوٹہ کی رہائشی متاثرہ بیوہ سعید ہ بی بی نے اہلخانہ نور محمد، طاہر، گلزار، سراج ودیگر کے ہمراہ پریس کلب میں پریس کانفرنس کرتے ہوئے کہا ہے کہ میرے شوہر اشفاق کے قتل میں ملوث قبضہ مافیا کے سرغنہ (ن) لیگ کے سابق ایم پی اے میاں شہزاد مقبول بھٹہ کے ایماءپر ملزمان محمد عرفان، اللہ رکھا ودیگر نے چادر وچار دیواری کا تقدس پامال کرتے ہوئے مدعی فیاض کے حمایتی صابر کی موجودگی میں صابر کے گھر میں زبردستی گھس کر دھاوا بول دیا اور انہیں جان سے مارنے کی کوشش کی اور کہا کہ اگر صلح نہ کی تو انہیں جان سے ماردیا جائے گاجن کے خلاف تھانہ کینٹ میں مقدمہ درج کردیا گیا ہے لیکن وہ آزاد ی سے دندناتے پھر رہے ہیں جبکہ میرے شوہر کے قتل میں ملوث دیگر ملزمان جمیل ، مظہر ، آصف اور اسلم منگن کی عدالت عبوری ضمانت منسوخ کرے اور انہیں گرفتار کیاجائے جو ہمیں جان سے ماردینے کی سنگین نتائج کی دھمکیاں دے رہے ہیں سعیدہ بی بی نے مزید کہا کہ وجہ عناد یہ ہے کہ قبضہ مافیا کے سرغنہ سابق لیگی ایم پی اے میاں شہزاد مقبول بھٹہ نے ملزمان ریاض کھر، تنویر، شہباز، ظفر ، محسن ، جمیل ، مظہر ، آصف ، اسلم منگن کے ہمراہ قریبی رشتہ داروں مغیث ، سراج کی 45کنال اراضی پر زبردستی قبضہ کرنے کی کوشش کی اور قبضہ نہ ہونے کی رنجش میں میرے شوہر اشفاق کو قتل کردیا جس کا مقدمہ تھانہ قطب پور میں درج ہے اور میاں شہزاد مقبول بھٹہ سمیت دیگر ملزمان عبوری ضمانت پر ہیں اور ہمیں صلح کے لئے دباﺅ ڈالنے کے لئے اوچھے ہتھکنڈے کررہے ہیں عبوری ضمانت پر ملزمان جمیل، مظہر، آصف ، اسلم منگن آج بھی ہمیں جان سے ماردینے کی سنگین نتائج کی دھمکیاں دے رہے ہیں اسی لئے عدالت ان کی عبوری ضمانت خارج کرے اور سابق لیگی ایم پی اے میاں شہزاد مقبول بھٹہ ودیگر ملزمان کو فی الفور گرفتار کرکے قرار واقعی سزا دی جائے انہوں نے چیف جسٹس آف پاکستان ، وزیراعلی پنجاب ، آئی جی، آر پی او، سی پی او ملتان سے مطالبہ کیا کہ مذکورہ ملزمان کے خلاف فی الفور کاروائی نہ کی گئی تو ہم بنی گالہ ، وزیراعلی ہاﺅس کے سامنے احتجاجی دھرنا دینے پر مجبور ہوجائیں گے ۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں