10

ملتان،ایس ایس ڈی او کے زیر اہتمام خواتین پر ہونے والے مظالم کے خلاف احتجاج

ملتان(سٹاف رپورٹر)سسٹین ایبل سوشل ڈیویلپمنٹ آرگنائزیشن اور سول سوسائٹی کیجانب سے خواتین اور بچوں پر تشدد کے حوالے سے ملتان پریس کلب پر احتجاجی مظاہرہ کیا گیا،جس میں سماجی رہنماؤں نے کثیر تعداد میں شرکت کی،احتجاجی مظاہرہ میں ظفر شاہین،فردوس،افتخار الحسن،عباس راجپوت،۔ضمیر علی،قلب عابد،خرم شہزاد،شکیلہ کنور،آرزو ناز،ملائکہ،خالدہ۔یاسر آزاد۔سمیت دیگر نے شرکت کی، اس موقع پر گفتگو کرتے ہوئے ایس ایس ڈی او کے ایگزیکٹو ڈائریکٹرسید کوثر عباس نے کہا ہے کہ نور مقدم قتل، قراتہ العین، صائمہ اور پھر نسیم بی بی اور اسکے 14 ماہ کے بچے کا جس بے رحمی اور بے دردی سے قتل کیا گیا وہ نا قابل قبول ہے۔ ایس ایس ڈی او اور سول سوسائٹی مطالبہ کرتی ہے کہ قانون کو مدنظر رکھتے ہوئے فی الفور ملزمان کو کڑی سے کڑی سزا دے کر کیفر کردار تک پہنچایا جائے۔ قانون کو حرکت میں لایا جائے۔ سول سوسائٹی اور ایس ایس ڈی او مطالبہ کرتی ہے کہ ملزمان کے ٹرائل تیزی سے کیے جانے چاہیے اور جہاں پر قوانین میں ترامیم کی ضرورت ہے ان میں تبدیلی کی جائے تاکہ معاشرے میں تشدد اور بچوں کے ساتھ زیادتی کے واقعات کو روکا جا سکے، معاشرے میں تشدد کے خاتمے کیلئے لوگوں کو تحفظ دینے اور فوری انصاف فراہم کرنے کی ضرورت ہے، اس موقع پر مقررین نے مزید کہا کہ خواتین اور بچوں پر تشدد اور ہراسگی کے واقعات روز بروز بڑھتے چلے جارہے ہیں۔ سیول سوسائٹی، حکومت، میڈیا اور قانون نافذ کرنے والے اداروں کو چاہیے کہ لوگوں کیلئے آگاہی مہم کا آغاز کریں۔ آگاہی مہم سے معاشرے میں بڑھتے ہوئے خواتین اور بچوں پر تشدد کے واقعات پر قابو پایا جاسکتا ہے۔ انصاف کی فراہمی کو یقینی بنانا اشد ضروری ہے۔ جس معاشرے میں فی الفور انصاف کی فراہمی نہ ہو اس معاشرے کی جڑیں کھوکھلی ہو جاتی ہیں۔ نور مقدم، نسیم بی بی جیسے واقعات آئے روز بڑھتے چلے جارہے ہیں۔ قانون کی عملداری کو فوری اور یقینی بنانے کی ضرورت ہے،ایس ایس ڈی او معاضی میں پاکستان میں خواتین اور بچوں پر تشدد اور ہراسگی کے واقعات کے حوالے سے سالانہ رپورٹ بھی شائع کر چکی ہے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں