23

ملتان،پولٹری کا بڑا مافیا قانون کے شکنجے میں،بین الاضلاعی مطلوب اشتہاری کو سزا دلوانے کیلیے عوام کی نظریں عدلیہ پر،چیف جسٹس سے نوٹس لینے کی اپیل

ملتان(کرائم رپورٹر)شیخ طارق حسین المعروف شیخ فیصل نے پورے پنجاب کی پولٹری مارکیٹ میں ملتان سے آپریٹ کرتے ہوئے کروڑوں کا غبن کرکے لوگوں کو بے پناہ لوٹا۔ ۲۰۱۸-۲۰۱۹ کے درمیان اس مافیا کے سربراہ نے مختلف محکموں کے اثر رسوخ والے افراد کو ساتھ ملا کر بہت سے پولٹری فارموں کا صفایا کیا جس سے کئی فارم والے دیوالیہ ہوگئے اور وہ اپنے گھروں اور جائداد سے ہاتھ دھو بیٹھے،انتظامیہ اور پولیس کو بہت ساری درخواستیں موصول ہونے پر پولیس اور ادارے حرکت میں آئیں،جسکے نتیجے میں سی پی او ملتان منیر مسعود مارتھ نے ایس ایس پی انویسٹیگیشن کیپٹن (ر) عامر نیازی کی سربراہی میں ایک ٹیم تشکیل دی جس نے طویل محنت کر کے اور جدید ترین ٹیکنالوجی کا استعمال کر کے بالآخر اُسکو گرفتار کر لیا گیا اور اب یہ فراڈیا ڈسٹرکٹ جیل ملتان میں قید ہے،متاثرین لوگوں کو چاہئے کہ اپنے متعلقہ تھانوں میں ثبوتوں کے ساتھ اپنی درخواستیں جمع کرا دیں تاکہ سب کو اُنکا حق مِل سکے،جن لوگوں کی درخواستوں پر پولیس عمل درآمد نہیں کر رہی، وہ آئی جی کمپلینٹ نمبر 1787 پر اپنی شکایت درج کروا سکتے ہیں،عوامی اور سماجی حلقوں نے اس کاوش کو بہت سراہا ہے اور عدلیہ پر اپنا مکمل اعتماد ظاہر کرتے ہوئے یہ اُمید ظاہر کی ہے کہ عدلیہ اس فراڈیا سے تمام متاثرین فارمرز کو اُنکا حق دلوائے گی،ذرائع سے معلوم ہوا ہے کہ جوڈیشل مجسٹریٹ جواد ظفر نے تمام سیاسی پریشر اور اپنی جانی و مالی نقصان کی دھمکیوں کو پسِ پُشت ڈالتے ہوئے ابتدائی مراحل میں اس سرغنہ کی ضمانت خارج کر دی ہے،عوام نے وزیرِاعظم، وزیرِاعلیٰ اور چیف جسٹس صاحب سے بھی نوٹس لینے کی اپیل کی ہے، تاکہ قانونی کاروائی عین میرٹ پر مکمل کر کے متائژین کو اُنکا جائز حق دلوایا جا سکے اور ملزموں کو کیفرِ کردار تک پہنچایا جا سکے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں