11

ملتان کو منظم انداز سے جدید تقاضوں سے ہم آہنگ کرکے نیا شہر بنارہے ہیں،ارم ناز سینئر اربن پلانر

ملتان(سٹاف رپورٹر)ملتان کو منظم انداز سے جدید تقاضوں سے ہم آہنگ کرکے ایک نیا شہر بنارہے ہیں،اس سلسلے میں شہر کو درپیش مسائل کی نشاندہی کے لئے مربوط رابطہ کاری کا عمل جاری ہے،جس میں تمام مکاتب فکر و شعبہ ہائے زندگی کی شمولیت یقینی بنائی جارہی ہے،تاکہ اصل مسائل سامنے آسکیں اور ان مسائل کے مستقل حل بارے میں موثر حکمت عملی اختیار کی جائے،ملتان ایک قدیم ترین شہر ہے اور بدقسمتی سے ہر دور اقتدار میں نظر انداز ہوتا رہا ہے،شہر میں سوریج کا ناقص ترین نظام، نکاسی و فراہمی آب کی ابتر صورتحال، آلودگی، سڑکوں و گلیوں کی خراب صورتحال، شہر میں غلہ و لوہا مارکیٹ کا رش، پارکنگ کی عدم دستیابی و سڑکوں پر بے ہنگم ٹریفک کا اژدہام، زیر زمین آلودہ پانی سمیت دیگر مسائل موجود ہیں،ان مسائل سے نجات حاصل کئے بغیر انسانی و سماجی ترقی ممکن نہیں، ان خیالات کا اظہار ارم ناز (سینئیر اربن پلانر) ملتان نے آواز دو پروجیکٹ کے تحت ڈسٹرکٹ فورم ملتان کے اراکین سے خطاب کرتے ہوئے کیا، اس موقع پر گفتگو کرتے ہوئے صوبائی ہیڈ ایس پی او پنجاب شاہنواز خان نے کہا کہ ملتان، شجاعباد اور جلال پور پیروالہ میں آواز دو پروجیکٹ کا آغاز کردیا گیا ہے،جس کا بنیادی مقصد یہی ہے کہ حکومتی اداروں بالخصوص مقامی حکومت کے ذریعے عوام کے مسائل ان کی دہلیز پر حل کئے جائیں،معاشرے میں سوچ کی آبیاری ہو اورتمام تر امتیازات سے بالاتر ہوکر انسانی عزت و توقیر کو فروغ حاصل ہو۔ اس موقع پر الگ الگ گفتگو کرتے ہوئے تاجر رہنما خالد محمود قریشی،انچارج خواتین سنیٹر منیزہ منظور، چئیرپرسن شیلٹر ہوم شاہد محمود انصاری، سماجی رہنما ڈاکٹر فاروق لنگاہ،فرخ خان، جواد امین قریشی،زاہدہ حمید، گلشن طاہرہ وڑائچ اور میڈم بلالی نے کہا کہانسانی حقوق کی فراہمی اور حفاظت کے سلسلے میں ہمارے مُلک میں ہر سطح پر قوانین موجود ہیں لیکن عام آدمی ان قوانین اور اس کے ثمرات سے آگاہ نہیں۔ ضرورت اس امر کی ہے کہ ان قوانین کی تشہیر کی جائے۔ کم عمری کی شادی ہو یا جبری مشقت، خواجہ سراؤں کو درپیش مسائل ہوں یا خواتین پر تشدد کے حوالے سے واقعات ہورہے ہوں۔ اس ضمن میں قوانین موجود ہیں۔ ان قوانین پر تب ہی عملدرآمد ممکن ہوگا جب نچلی سطح تک معلومات کی فراہمی یقینی ہوگی اور اس سلسلے میں حکومت کے ساتھ ساتھ سماجی ادارے کلیدی کردار ادا کررہے ہیں۔ اس موقع پرثناء اللہ خان، عبدالمطلب فرخ، مس آمنہ، آصف رشید، ظفر شاہین، زاہدہ خان اور امیر نواز نے بھی خظاب کیا۔ تقریب میں محمد عباس، محمد صدیق، گلناز کاشف،چوہدری منصور، محمد ہاشم، محمد نعیم و دیگر شریک ہوئے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں