15

ملک میں بیروزگار افراد کی تعداد میں اضافے کا انکشاف

اسلام آباد(بیورو رپورٹ)ملک میں بیروزگار افراد کی تعداد میں اضافے کا انکشاف جبکہ چپڑاسی کی نوکری کیلئے اپلائی کرنے والوں میں ایم فل پاس بھی شامل تھے،تفصیلات کے مطابق سینیٹر سلیم مانڈوی والا کی صدارت میں پلاننگ اینڈ ڈویلپمینٹ کمیٹی کا اجلاس ہوا، اجلاس کے دوران انکشاف ہوا کہ ملک میں بڑی تعداد میں پڑھی لکھی خواتین بے روزگار ہیں،اجلاس کے دوران چیئرمین کمیٹی نے ملک میں بیروزگار افراد کے حوالے سے حکام سے مزید تفصیلات طلب کرتے ہوئے کہا کہ ملک میں پڑھے لکھے نوجوانوں اور بچوں کی تعداد کیا ہے؟پاکستان انسٹیٹیوٹ آف ڈویلپمینٹ اکنامکس نے بے روزگار افراد سے متعلق کمیٹی کو بریفنگ دیتے ہوئے کہا کہ حکومت کہہ رہی ہے کہ ملک میں بے روزگار افراد کی تعداد ساڑھے 6 فیصد ہے، ملک میں بے روزگار افراد کی تعداد 16 فیصد ہے، ملک میں 24 فیصد پڑھے لکھے افراد بے روزگار ہیں، ملک میں 40 فیصد پڑھی لکھی خواتین بے روزگار ہیں،حکام کے مطابق ملک میں بے روزگار افراد کی تعداد اور بھی زیادہ ہے، بعض لوگ نوکری نہ ملنے کے باعث ایم فل وغیرہ میں داخلہ لے لیتے ہیں، ان افراد کے پاس کوئی اور آپشن نہیں ہوتا اس لئے وہ مزید پڑھتے رہتے ہیں، ہائی کورٹ میں چپڑاسی کی نوکری آئی جس کے لئے ڈیڑھ لاکھ افراد نے اپلائی کیا،حکام کے مطابق چپڑاسی کی نوکری کے لئے اپلائی کرنے والوں میں ایم فل کرنے والے افراد بھی تھے،ملک میں کوئی ریسرچ نہیں ہو رہی، پی آئی ڈی ای حکومت کوئی ریسرچ نہیں کر رہی، ساری ریسرچ باہر بیٹھا ایک گورا کر رہا ہے، نیپرا سمیت اہم بل بھی باہر بیٹھے افراد نے بنائے، ملک میں ریسرچ کے لئے بڑی بڑی عمارتیں بنائی گئی ہیں لیکن اندر ریسرچ کوئی نہیں ہو رہی۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں