11

مہنگائی سے عوام کا جینا دوبھر، اشیائے خورونوش کی قیمتیں پہنچ سے باہر

ملتان(سٹاف رپورٹر)تحریک انصاف حکومت کے تین سال میں مہنگائی نے عوام کا جینا دوبھر کر دیا،اشیائے خوردونوش کی قیمتیں عام افراد کی پہنچ سے باہر ہو گئیں،چینی 55 روپے سے 105 روپے فی کلو تک پہنچ گئی، آٹے کا 20 کلو کا تھیلا 362 روپے مہنگا ہوا،ادارہ شماریات کے مطابق اگست 2018 میں چینی کی اوسط قیمت 55 روپے 59 پیسے فی کلو تھی جو اگست 2021ء میں 105 روپے 51 پیسے ہو چکی ہے،تین سال میں دال ماش 95 روپے 60 پیسے، دال مسور 43 روپے 94 پیسے، دال مونگ اوسط 68 روپے 86 پیسے جبکہ دال چنا 29 روپے77 پیسے فی کلو مہنگی ہوئی،تین سال میں بکرے کا گوشت 337 روپے، گائے کا گوشت 169 روپے، دودھ 25 روپے 89 پیسے فی لٹر جبکہ دہی 26 روپے 78 پیسے فی کلو مہنگا ہوا،دستاویز کے مطابق موجودہ حکومت کے دور میں لہسن 120 روپے 68 پیسے، برائلر مرغی 37 روپے 91 پیسے جبکہ انڈوں کی قیمت میں 58 روپے 37 پیسے فی درجن اضافہ ہوا،ملک میں دوہفتوں کےدوران لہسن اور ٹماٹر کی قیمتوں کو پر لگ گئے، ادارہ شماریات کے مطابق گزشتہ دو ہفتوں کے دوران لہسن 70 روپے اورٹماٹر 30 روپے کلو تک مہنگاہوا،ادارہ شماریات کے مطابق گوجرانوالہ میں لہسن 70 روپے فی کلو مہنگا ہو کر 280 روپے فی کلو تک پہنچ گیا ہے، اسلام آباد میں گزشتہ دو ہفتوں میں لہسن کی قیمت میں 40 روپے فی کلو کا اضافہ ہوا اورلہسن کی فی کلو قیمت 320 روپے تک پہنچ گئی،راولپنڈی میں لہسن کی قیمت 20 روپے اضافے کے ساتھ 280 روپے فی کلو تک ہو گئی،لاہور اور فیصل آباد میں لہسن دو ہفتوں میں 20 روپے فی کلو مہنگا ہوا۔ ملتان، بہاولپور اور کراچی میں لہسن 280 روپے، پشاور اور کوئٹہ میں 270 روپے فی کلو ہو گیا ہے،حیدر آباد میں ٹماٹر دو ہفتوں میں 70 سے 100 روپے فی کلو تک پہنچ گیا ہے۔ جڑواں شہروں میں ٹماٹر کی قیمت 120 روپے فی کلو ہو گئی ہے۔ گوجرانوالہ میں ٹماٹر 20 روپے مہنگا ہو کر 100 روپے کلو تک پہنچ گیا ہے،سیالکوٹ، لاہور، کراچی اور حیدر آباد میں ٹماٹر 100 روپے کلو تک پہنچ گیا ہے۔ ادارہ شماریات نے مزید بتایا کہ لاہور، فیصل آباد اور سکھر میں لہسن کی قیمت 240 روپے فی کلو تک ہو گئی ہے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں