5

میلسی،ڈاکٹرز اور عملہ کی غفلت سے بچہ دم توڑ گیا،ورثاء کے احتجاج پر نرس معطل

میلسی(نمائندہ پی این این اردو)ڈائریا میں مبتلا 5سالہ کمسن بچہ تحصیل ہیڈ کوارٹر ہسپتال کے ڈاکٹرز اور عملے کی غفلت کی وجہ سے دم توڑ گیا،ورثاء کا ڈیوٹی ڈاکٹرز اور عملے کیخلاف شدید احتجاج،تفصیل کے مطابق محلہ رسول پورہ کے رہائشی غلام حسین نے بتایا کہ اس کے 5سالہ بیٹے عثمان علی کی طبیعت خراب ہو گئی اور وہ ڈائریا میں مبتلا تھا جس پراسے تحصیل ہیڈ کوارٹر ہسپتال میلسی لے آیا،جہاں ڈیوٹی ڈاکٹر حماد نے اسے چیک کئے بغیر وارڈ میں داخل کرنے کی سلپ بنا دی،وارڈ میں ڈاکٹر موجود نہ تھا جبکہ سٹاف نرس اور عملہ وارڈ کے اندر کھانا کھانے میں مصروف تھا،ہمارے احتجاج پر نرسنگ سٹاف نے ابتدائی طبی امداد دی لیکن رات بھر آن کال ڈیوٹی ڈاکٹر کو بار بار بلانے کے باوجود ڈاکٹر نہ آیا اور سٹاف نرس رابعہ منظور نے بھی کوئی توجہ نہ دی جس کی وجہ سے ہمارا بچہ رات بھر تکلیف میں تڑپتا رہا اور اگلی صبح دم توڑ گیا دریں اثناء بچے کی ہلاکت پر غلام حسین اس کے بھائی محمد بلال اور دیگر لواحقین نے وارڈ کے اندر ہی شدید احتجاج شروع کر دیا اور بچے کی نعش گھر لے جانے سے انکار کر دیا ۔جس پر ایم ایس ڈاکٹر رائو مسعود اکبر نے سٹاف نرس رابعہ منظور کو معطل کرتے ہوئے ڈاکٹر عمران نواز لنگاہ ، ڈاکٹر احمد فراز، ڈاکٹر یاسر ممتاز اور ہیڈ نرس زاہدہ پر مشتمل 4رکنی انکوائری کمیٹی بنا دی جو واقعہ کی مکمل تحقیقات کرے گی۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں