20

نومسلم جوڑے کو ہراساں کرنے پر سماعت

ملتان،عیسائی جوڑا اسلام سے متاثر ہو کر مسلمان ہوا تو خاندان دشمن بن گیا،نو مسلم جوڑے علی حسن اور فاطمہ نے تحفظ کے لئے عدالت سے رجوع کر لیا،عدالت نے پولیس تھانہ قطب پور اور پولیس تھانہ کینٹ کو نو مسلم جوڑے کو ہراساں کرنے سے روک دیا ہے،نو مسلم جوڑے نے ایڈووکیٹ ثمرہ جبیں بلوچ کے توسط سے عدالت سے رجوع کیا،نو مسلم جوڑے نے اسلام قبول کر کے شریعت محمدی کے مطابق شادی کی،مذہب اسلام قبول کرنے کے بعد شمعون اور کومل نے اپنے اسلامی نام علی حسن اور فاطمہ رکھ لئے،نومسلم لڑکی کا کہنا ہے کہ خاندان قتل اور جھوٹے مقدمات میں پھنسانے کی دھمکیاں دے رہا ہے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں