7

ٹریکٹر سے 2خواتین کو کچل دیا، ایک جاں بحق ،پولیس کا صلح کیلئے دبائو

کبیروالا،خاتون 8دن موت و حیات کی کشمکش کے بعد خالق حقیقی سے جاملی، قاتل نے مرضی کا کا م نہ کرنے کا الزام لگا کرخاتون پر ٹریکٹر چڑھا کر کچل ڈالاتھا،پولیس قاتل پر مہربان ہوچکی ہے، قاتل گرفتارکی بجائے مدعیان پر صلح کے دبائو، قتل کی بجائے اقدام قتل کی دفعات کامقدمہ در ج کرلیا، قتل کی دفعہ شامل اورملزم کو گرفتار کیا جائے، متاثرہ خاندان کا پولیس کی جانبداری کے خلاف احتجاج، تفصیل کے مطابق نواحی بستی ڈھڈیانوالی نبی پور کے رہائشی محمد اقبال ولد محمد اسلم لپرانے میڈیا کے سامنے پولیس تھانہ بارہ میل کے خلاف احتجاجی مظاہرے کے دوران بتایا کہ گزشتہ ماہ کی 15کو ملزم محمد ریاض ولد ولی محمد نے ٹریکٹر ٹرالی پر چھلیاں لوڈ کر نے کے دوران اسکی محنت کش بیوی نسرین مائی اوررشتہ دار خاتون صفیہ مائی پر ٹریکٹر چڑھا کر کچل ڈالا تھا جنہیں زخمی حالت میں ہسپتال لے جایا گیا جہاں 8روز تک مو ت و حیات کی کشمکش میں مبتلا رہنے کے بعد اسکی بیوی نسرین مائی زخموں کی تاب نہ لاتے خالق حقیقی سے جاملی مگر بارہ میل پولیس نے ملزم کی سیاسی پہنچ اورچمک کے عوض اسکے خلاف 302کی بجائے اقدام قتل کا مقدمہ در ج کیا اورملزم کی گرفتاری سے بھی گریزاں رہی،متاثرہ محمد اقبال نے میڈیا کے توسط سے اعلیٰ حکام سے نامزد ملزم کے فوری کاروائی کامطالبہ کیا ہے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں