7

پاکستان کاٹن جنرز ایسوسی ایشن کے چیئرمین کی زیر صدارت اجلاس

ملتان، ڈاکٹر جسومل کی زیر صدارت سانگھڑ میں حالیہ بجٹ مین مجوزہ ٹیکسوں کے نفاذ کے متعلق اجلاس منعقد ہوا،جس میں کثیر تعداد میں ممبران نے شرکت کی۔چیئرمین نے کہا کہ زیرِ عتاب جننگ انڈسٹری جو کہ کپاس کی پیداوار میں کمی اور ٹیکسوں کی بھر مار کے باعث اپنی بقا کی جنگ لڑ رہی ہے اس پر حالیہ بجٹ میں نئے ٹیکسوں کے نفاذ سے بحران شدت اختیار کر جائے گا اور جننگ انڈسٹری کا پہیہ چلنا ناگزیر ہو جائے گا۔انہوں نے کہا کہ مجوزہ ٹیکسوں کو ختم کروانے کے لئے تمام متعلقہ اعلیٰ حکومتی سربراہان کو تحریری طور پر لکھ دیا گیا ہے اور ملاقاتوں کا سلسلہ بھی جاری ہے۔سندھ میں کاٹن سیزن کا آغاز ہو چکا ہے لیکن مجوزہ ٹیکسوں اور لاگو شدہ ٹیکسوں کے باعث انڈسٹری مکمل طور پر بند کرنے کا خدشہ پیدا ہو گیا ہے۔معیشت کو مضبوط اور جننگ انڈسٹری کا پہیہ رواں دواں رکھنے کے لیے فی الفور نئے بجٹ کی منظوری سے پہلے مجوزہ ٹیکسوں کو ختم کیا جائے اور کاٹن جنرز کو با آسانی کاروبار کرنے کے لیے سہولیات فراہم کی جائیں۔ مجوزہ ٹیکسوں کے خاتمہ کیلئے انہوں نے وزیراعظم پاکستان عمران خان، وزیر خزانہ شوکت ترین، وفاقی وزیر نیشنل فوڈ سکیورٹی اینڈ ریسرچ سید فخر امام،ایڈوائزر ٹیکسٹائل اینڈ کامرس عبدالرزاق داؤد، وفاقی وزیر انڈسٹریز و پروڈکشن،ایڈوائزر فنانس اینڈ ریونیو ڈاکٹر وقار مسعودخان، سپیشل کمیٹی برائے ایگریکلچر اور سٹینڈنگ کمیٹی برائے فنانس اینڈ ریونیو کے چیئرمین اور چیئرمین ایف بی آر عاصم احمد کو درخواست کی ہے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں