9

پاکستان کو گرے لسٹ میں رکھنا بلاجواز ہے،شاہ محمود قریشی

ملتان،وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی نے ڈسٹرکٹ کوآرڈی نیشن کمیٹی میں تین پوائنٹ ایجنڈا پر گفتگو کی،ملتان کے صفائی، سیوریج سمیت دیگر مسائل پر گفتگو کی گئی،شاہ محمود قریشی نے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ عید تک سالڈ ویسٹ مینجمنٹ کے ایم ڈی کو کارکردگی دکھانے کی مہلت دی گئی ہے،اگلی میٹنگ میں ملتان کے ماسٹر پلان اور منڈیوں کی منتقلی پر گفتگو کی جائے گی،پنجاب کا بجٹ منظور ہونے پر پنجاب حکومت کو مبارکباد پیش کرتا ہوں،189 بلین روپے کا اے ڈی پی جنوبی پنجاب کے 11 اضلاع کے لئے رکھا گیا ہے،اگلی میٹنگ تک انتظامیہ سے سکیموں کی حوالے سے پلان مانگا ہے،جنوبی پنجاب کے منصوبوں کا پیسہ یہاں ہر ہی لگے گا،انہوں نے جنوبی پنجاب کے سیکرٹریز کو جنوبی پنجاب کے حوالے سے پی ٹی آئی کے منشور پر بریفنگ دی،شاہ محمود قریشی نے کہا کہ رولز آف بزنس میں ترامیم کے حوالے سے پرسوں معاملات تقریباً طے ہو چکے ہیں،جنوبی پنجاب کے سیکرٹریٹ کے حوالے سے بجٹ میں فنڈز مختص کر لیا گیا ہے،63 ایکڑ زمین پر اگست کے پہلے ہفتے میں جنوبی پنجاب سیکرٹریٹ کا کام شروع کر دیا جائے گا،امید کی جا رہی ہے کہ جلد بہاولپور میں 30 ایکڑ زمین پر سیکرٹریٹ کی بنیاد رکھی جائے گی،ہمیں پوسٹ آفس نہیں، با اختیار افسران جنوبی پنجاب سیکرٹریٹ میں چاہیئے ہیں،انہوں نے مزید کہا کہ جنوبی پنجاب کی اہم ترین فصل کپاس کی پیداوار کم ہونا شروع ہوگئی،سی پیک کے تحت پروگرام میں کپاس کی پیداوار اور ریسرچ لئے شامل کر دیا گیا،چیئرمین سی پیک اتھارٹی کاٹن ریسرچ انسٹیٹیوٹ کی تشکیل نو کے لیے اگلے ہفتے ملتان کا دورہ کریں گے،ن لیگ کے رانا تنویر کو کہا کہ پاکستان آپ کی حکومت کے دور میں گرے لسٹ میں گیا،ہم نے 27 پوائنٹس میں سے 26 پر مکمل عملدرآمد کروایا ہے،دنیا اور ایف اے ٹی ایف کے ممبران کو فیصلہ کرنا ہوگا کہ کیا ایف اے ٹی ایف ٹیکنیکل فورم ہے یا پولیٹیکل۔ ہمارے اقدامات کی وجہ سے پاکستان کو وائٹ لسٹ میں ہونا چاہیئے تھا،وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی کا کہنا ہے کہ بھارت نے ایف اے ٹی ایف کے فورم کو پاکستان کے خلاف بطور سیاسی فورم استعمال کرنے کی کوشش کی،ہم کسی کے کہنے پر نہیں اپنی قومی ضرورت کے تحت آگے بڑھ رہے ہیں،پاکستان جلد ہی گرے لسٹ سے باہر آ جائے گا،بھارت میں یورینیم کے پکڑے جانے کا معاملہ مختلف فورمز پر اٹھایا ہے،بدقسمتی سے پاکستانی میڈیا نے اس پر وہ توجہ نہیں دی جو دینی چاہیئے تھی،امریکا کے افغانستان سے انخلاء سے متعلق فیصلہ کر لیا گیا ہے،امریکی انخلاء کے بعد تشدد بڑھنے کا خدشہ ہے،شاہ محمود قریشی نے مزید گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ خانہ جنگی کا افغانستان کے بعد سب سے زیادہ نقصان پاکستان کو ہوگا،پاکستان نہیں چاہتا ہے مزید مہاجرین یہاں آئیں،افغان امن عمل میں مہاجرین کی واپسی کو بھی حصہ بنایا جانا چاہیئے،ترکی سے امریکی انخلاء کے بعد افغان ایئرپورٹ پر مدد کی درخواست کی گئی ہے،افغانستان اور طالبان نے اس حوالے سے فیصلہ کرنا ہے،ترکی کی جانب سے بھی فیصلہ ہونا باقی ہے،لاہور میں دہشت گردی کے واقعہ پر پیش رفت ہوچکی ہے،پاکستان کے امن سے کھیلنے کی کسی کو اجازت نہیں دی جائے گی،ق لیگ کے دوستوں کی جانب بجٹ میں تعاون پر شکر گزار ہیں،بجٹ کے حوالے سے بڑی باتیں ہو رہی تھیں کہ منظور نہیں ہوگا،طالبان کی قیادت نے جے شنکر سے ملاقات کی نفی کی ہے،کشمیر کے حوالے سے بھارتی وزیراعظم کی میٹنگ میں کشمیر کے حوالے سے اقدامات کی نفی کی گئی ہے،میری نظر میں کشمیری قیادت ابھی تک بھارتی حکومت کے اقدامات سے متفق نہیں ہے، میٹنگ میں کشمیری حریت قیادت کو بھی مدعو نہیں کیا گیا،وزیر خارجہ نے کہا کہ پی ایس ایل میں ملتان سلطانز کی جیت پر سب کو مبارکباد پیش کرتا ہوں،ملتان سلطانز کی جیت پر ٹیم کے مالک عالمگیر خان ترین کو بھی دلی مبارکباد پیش کرتا ہوں،وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی کا کہنا ہے کہ ایف اے ٹی ایف کو حکومتی اقدامات دیکھتے ہوئے پاکستان کو وائٹ لسٹ میں شامل کرنا چاہیئے تھا،بھارت نے فیٹف کے فورم کو سیاسی طور پر استعمال کرنے کی کوشش کی،مودی سرکار آل پارٹیز کانفرنس کے مطلوبہ نتائج حاصل نہیں کر سکی،ملتان میں پریس کانفرنس کرتے ہوئے شاہ محمود قریشی نے کہا کہ لاہور بم دھماکے میں اہم پیش رفت ہوئی ہے ، جلد ذمہ دار بے نقاب ہوں گے،کچھ عناصر پاکستان کو غیر مستحکم کرنا چاہتے ہیں،امید ہے پاکستان جلد گرے لسٹ سے نکل جائے گا،انہوں نے مزید کہا کہ افغانستان سے امریکی فوج کے انخلاء کے بعد افراتفری بڑھنے کا خدشہ ہے،ہم افغانستان میں امن اور خوشحالی کے خواہاں ہیں،ہم نہیں چاہتے کہ افغانستان کی وجہ سے ہمارے ہاں حالات خراب ہوں، ہم پناہ گزینوں کا مزید بوجھ برداشت نہیں کر سکتے، شاہ محمود قریشی نے کہا کہ ق لیگ کی جانب سے صوبائی بجٹ پاس کروانے کے لئے تعاون پر مشکور ہیں،جنوبی پنجاب صوبہ ہمارے پارٹی منشور کا حصہ ہے،اگست میں جنوبی پنجاب سیکرٹریٹ کی عمارت پر باقاعدہ طور پر کام شروع ہو جائے گا،ہمیں با اختیار سیکرٹریٹ چاہیئے،انہوں نے پی ایس ایل چیمپئن بننے پر ملتان سلطانز کے مالک عالمگیر خان ترین کو مبارکباد بھی دی.

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں