13

پنجاب میں سولر انقلاب،لاہور ہائیکورٹ کو شمسی توانائی پر منتقل کرنیکا فیصلہ

لاہور،وزیر توانائی پنجاب ڈاکٹر محمد اختر ملک نے انصاف لائرز فورم لاہور ہائی کورٹ سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ ہم نے محکمہ توانائی سے کرپشن کا خاتمہ کیا،مسلسل خسارے میں رہنے والے ذیلی اداروں کو منافع بخش بنایا،مقامی ذرائع کو استعمال کرتے ہوئے ماحول دوست بجلی پیدا کرنے کے منصوبوں کا آغاز کیا،امپورٹڈ فیول سے چلنے والے مہنگے منصوبوں پر پابندی لگائی۔متبادل اور ماحول دوست زرائع توانائی پالیسی لیکر آئے۔پچھلی گورنمنٹ کے پھنسے ہوئے منصوبوں کو ایمرجنسی بنیادوں پر مکمل کیا۔سکولوں ، ہسپتالوں ، یونیورسٹیوں ، پنجاب بھر کے بنیادی مراکز صحت کو سولر پر منتقل کیا۔محکمہ توانائی پنجاب کو ایک نئی شناخت دی،انہوں نے وکلا سے اپنے خطاب میں کہا کہ لیہ میں چوبارہ کے مقام پر پاکستان کی تاریخ کے سستے ترین 100 میگا واٹ سولر انرجی کے منصوبہ کا آغاز کیا۔یہ منصوبہ رواں سال مکمل ہوگا اور پچاس ہزار افراد کے لئے روزگار کے مواقع پیدا کرے گا۔ملکی تاریخ کی سب بڑی فنانسگ سو ارب روپے سے تریموں 1263 میگا واٹ پاور پلانٹ رواں سال مکمل ہوجائے گا۔تریموں پاور پلانٹ کے لئے گیس کی فراہمی کا معاہدہ اس کا فنانشل کلوز کیا۔ان کے( ن) لیگ کے دور کے مہنگے ایگریمنٹ کو دوبارہ ری یو کیا اور عوام کے اربوں روپے بچائے۔پنجاب بھر کی جامعات کی ایسکو ماڈل ، سرکاری خزانے سے ایک روپیہ خرچ کئے بغیر سولر پر منتقلی کا منصوبہ رواں سال مکمل ہوجائے گا۔ نیا پنجاب سولرائیزیشن پروگرام کے تحت 10500 پرائمری سکولوں کی شمسی توانائی پر منتقلی ہو چکی ہے۔ان میں تقریبا 1800 وہ سکول بھی شامل ہیں جو 1947 سے بجلی سے محروم تھے۔اس منصوبے سے تقریبا 18 لاکھ طلبا کو بلا تعطل بجلی کی فراہمی ممکن ہوئی ہے۔ یو ای ٹی لاہور کیمپس کی سولر پر منتقلی جس سے یونیورسٹی کو سالانہ بجلی کے بل کی مد میں 1 کروڑ 70 لاکھ روپے کا فائدہ ہو رہا ہے۔ یونیورسٹی کو ایسکو ماڈل پر سولرائیز کیا گیا جس میں حکومت کا ایک روپیہ خرچ نہیں ہوا۔اگلے بیس سالوں میں یونیورسٹی کو 47 کروڑ کا فائدہ ہوگا۔۔اینٹی تھیفٹ کیمپین کے زریعے بجلی چوروں سے پنجاب بھر سے 3.15 ارب روپے کی ریکوری کرکے سرکاری خزانے میں جمع کرائی۔ساہیوال پاور پلانٹ میں مقامی سطح پر ہنرمند افرادی قوت کے لئے ٹیکنکل ٹرینگ سکول کا افتتاح کیا اور بہتر منصوبہ بندی سے قائداعظم سولر کمپنی میں سالانہ دو ارب روپے سے ذیادہ کا منافع کمایا۔قائد اعظم سولر کمپنی میں ماضی کے برعکس من پسند لوگوں کو نوانے کی روش کا خاتمہ کرکے 62 ملین روپے کی بچت کی۔پنجاب پاور کمپنی کو بہتر منصوبہ بندی سے پہلی بار خسارے سے منافع میں بدلا اور 217 ملین کا منافع کمایا۔پنجاب پاور گزشتہ حکومت کے دس سال مسلسل خسارے میں رہی اور مجموعی طور پر 350 ملین کا نقصان کیا۔۔آئندہ سال کے منصوبوں بارے بات کرتے ہوئے وزیر توانائی کا کہنا تھا کہ 29 نئے منصوبے لائے ہیں جس سے صوبے میں سولر انقلاب آئے گا اور پنجاب سولر صوبہ بن جائے گا۔پنجاب کے بیس بڑے درباروں ، جیلوں، سپیشل چلڈرن ہومز ، دارالامان ، پناہ گاہیں ، ڈی سی ، کمشنر آفسز وغیرہ کی شمسی توانائی پر روں سال منتقلی شامل ہے۔اپنی گرڈ کمپنی لا رہے ہیں ،خان صاحب کے ویڑن اور وزیر اعلی صاحب کی قیادت میں انرجی میں نیا پنجاب بنا کے دکھایا ہے۔اس موقع پر ڈاکٹر اختر ملک نے نشست کا اہتمام کرنے پر عمیر خان نیازی ، صدر انصاف لائیرز فورم پاکستان ، انیس ہاشمی صدر پنجاب ، زینب عمیر ایم پی اے ، کنوینر رائے محمد علی کھرل ، احمد وٹو اور رانا ناصر خان کا بھی شکریہ ادا کرتے ہوئے لاہور ہائی کورٹ بار کی سولر پر منتقلی کا اعلان بھی کیا۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں