9

پولیس مقابلہ،لادی گینگ کا ماسٹر مائنڈ ساتھیوں کی فائرنگ سے ہلاک

ڈیرہ غازی خان،شادن لنڈ،آر پی او فیصل رانا کی پروفیشنل کمانڈ میں لادی گینگ کے خلاف آپریشن میں پولیس کی بڑی کامیابی،پولیس مقابلے کے دوران لادی گینگ کا سیکنڈ ان کمانڈ ساتھیوں کی فائرنگ سے ہلاک،ملزم لادی گینگ کی طرف سے ہاتھ پاؤں ناک کاٹنے کی سنگین واردات میں بھی ملوث تھا،ہلاک ملزم پولیس اہلکاروں کو زخمی کرنے سمیت قتل اور ڈکیتی کے سنگین مقدمات میں پولیس کو مطلوب تھا،لادی گینگ کے خلاف آپریشن کے لئے وزیر اعظم پاکستان عمران خان نے خصوصی احکامات دے رکھے ہیں،ریجنل پولیس آفیسرمحمد فیصل رانا کو ڈی پی او عمر سعید ملک نے بریفنگ دیتے ہوئے بتایا کہ تھانہ کوٹ مبارک پولیس گشت کر رہی تھی کہ بستی تگیانی کے قریب لادی گینگ کے چھپے ہوئے ملزمان نے پولیس پر فائرنگ کر دی،پولیس نے بھی حفاظت خود اختیاری کے تحت جوابی فائرنگ کی،اسی دوران لادی گینگ کے کارندوں نے اپنے ہی ایک ساتھی گینگ کے ماسٹر مائنڈ کو فائرنگ کر کے قتل کر دیا اور فرار ہو گئے،ساتھیوں کی فائرنگ سے ہلاک ہونے والے گینگسٹر کی شناخت نور محمد کے نام سے ہوئی ہے،یہ ڈاکو لادی گینگ کی طرف سے وائرل کی جانے والی اس ویڈیو میں شامل تھا جس میں لادی گینگ نے سفاکیت کا مظاہرہ کرتے ہوئے ایک شخص کے ہاتھ پاؤں،ناک کاٹا،فائرنگ کی،جس سے وہ شخص جاں بحق ہو گیا،آر پی او فیصل رانا کو بتایا کہ ساتھیوں ڈاکوؤں کی فائرنگ سے ہلاک ہونے والا نورمحمد دو پولیس اہلکاروں کو زخمی کرنے کے علاوہ قتل اور ڈکیتی کی سنگین وارداتوں میں پولیس کو مطلوب تھا،آر پی ا وفیصل رانا نے پولیس افسران کو شاباش دیتے ہوئے کہا کہ پولیس کے بروقت ریسپانس کی وجہ سے لادی گینگ کے ڈاکوؤں نے پکڑے جانے کے خوف سے گینگ کے ماسٹر مائنڈ نور محمد کو قتل کر دیا،انہوں نے ہدائت کی کہ مفرور ملزمان کی گرفتاری کے لئے سرچ آپریشن جاری رکھا جائے،جس کی نگرانی خود ڈی پی او کریں گے،دریں اثنا لادی گینگ کے ماسٹر مائنڈ نور محمد کی ساتھی گینگسٹرزکی فائرنگ سے ہلاکت پر وکلا،تاجروں اور علما کرام کے نمائندے پولیس کی بروقت کی جانے والی کارکردگی کا اعتراف کرنے آر پی او آفس پہنچ گئے،انجمن تاجران کے ضلعی صدر شیخ محمد نقیب،سٹی صدر جان عالم لغاری،ڈسٹرکٹ بار کے صدر عظمت اسلام اور جنرل سیکرٹری اعجاز کلاچی، مولانا جمال عبد الناصر،مولانا اقبال رشید اور حافظ احمد حسن نے کہا کہ لادی گینگ کے خلاف قانون کے جاری آپریشن میں قانون پسند عوام پولیس کے ساتھ کھڑے ہیں۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں