10

پیپلز پارٹی کا کشمیر سے تین نسلوں کا رشتہ ہے،خواجہ رضوان عالم،نسیم لابر و دیگر

ملتان(سٹاف رپورٹر)کشمیر کے فیصلے کشمیری عوام کریں،ہم کسی کی ڈکٹیشن نہیں مانتے،کوئی کٹھ پتلی جماعت کشمیریوں سے ہمارا تعلق نہیں توڑ سکتی، سلیکٹڈ وزیراعظم عمران خان بھارتی وزیراعظم نریندر مودی کے جیتنے کی دعا کرتا رہا ہے کسی کٹھ پتلی کو کشمیر کا سودا کرنے کی اجازت نہیں دیں گے،(ن)لیگ کی حکومت نے بھی آزاد کشمیر کی عوام کو لاوارث چھوڑا لیکن پیپلزپارٹی نے ہمیشہ کشمیری عوام کے حقوق کی جنگ لڑی ہے اور ماضی گواہ ہے کہ آزاد کشمیر میں سب سے زیادہ ترقیاتی کام پیپلزپارٹی کے دور میں ہوئے ہیں،قائد عوام شھید ذوالفقار علی بھٹو کے بارے میں بات کرنے والے ذرا آئینہ دیکھیں کلبھوشن کو این آر او اسی عمران خان نے دیا ہے،جبکہ پیپلزپارٹی کے چیئر مین بلاول بھٹو زرداری نے واضح طور پر ڈنکے کی چوٹ پر کہا ہے کہ کشمیری حکم کریں، جنگ کرنی ہے تو ہم ساتھ ہوں گے، کشمیری حکم کریں گے کہ امن کرنا ہے تو ہم امن کریں گے کیونکہ پیپلزپارٹی سمجھتی ہے کشمیر کے فیصلے کشمیری عوام کریں پیپلزپارٹی کسی کی ڈکٹیشن نہیں مانتی عوام کا حکم مانتے ہیں آج 25 جولائی آزاد کشمیر کے لئے امتحان ہے، الیکشن شفاف ہوئے تو یہ نشستیں پیپلز پارٹی کی ہوں گی اور پیپلزپارٹی کے دونوں امیدوار ملتان سے جیتیں گے ان خیالات کا اظہار پیپلزپارٹی جنوبی پنجاب کے سینئر نائب صدر خواجہ رضوان عالم،سٹی صدر ملک نسیم لابر، امیدوار کشمیر ویلی 42 حفیظ بٹ، ضلعی جنرل سیکرٹری راو ساجد علی، سٹی جنرل سیکرٹری اے ڈی بلوچ، صدر پیپلز لیبر بیورو ملک عاشق بھٹہ،صوبائی ٹکٹ ہولڈر حاجی شاہد رضا صدیقی، سٹی سیکرٹری انفارمیشن خواجہ عمران، سینئر نائب صدر سٹی میاں منظور قادری، نائب صدر سٹی نعیم شہزاد بھٹی، ضلعی سیکرٹری انفارمیشن چوہدری یاسین، سینئر نائب صدر کلچر ونگ جنوبی پنجاب کامران مگسی، سینئر نائب صدر خواتین ونگ جنوبی پنجاب راضیہ رفیق، ڈویژنل جنرل سیکرٹری خواتین ونگ نورین قیصر، ملک افتخار علی، طارق کھوکھر، ملک قیصر اعوان، شمشاد سیال، ملک امداد ملنگ، شبانہ گل، اشفاق انصاری, شیخ مقدس علی، خالد انصاری و دیگر نے 25 جولائی کو کشمیر الیکشن کے حوالے سے ملتان میں پولنگ ڈے کی تیاریوں کے سلسلہ میں پیپلزپارٹی ملتان سٹی کے صدر ملک نسیم لابر کی صدارت میں اہم اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے کیا،اجلاس میں خواجہ رضوان عالم مہمان خصوصی تھے،انہوں نے مزید کہا کہ پیپلز پارٹی کا کشمیر سے تین نسلوں کا رشتہ ہے،کوئی کٹھ پتلی جماعت کشمیر سے ہمارا تعلق نہیں توڑ سکتا شھید بینظیر بھٹو جب وزیراعظم تھیں تو پوری دنیا پاکستان کی بات سنتی تھی آج کٹھ پتلی بات کرتا ہے تو لوگ مذاق اڑاتے ہیں، آزاد کشمیر میں موجودہ ن لیگ کی حکومت ہے انہوں نے کشمیر کو لاوارث چھوڑا لیکن پیپلزپارٹی نہیں چھوڑے گے۔ پیپلزپارٹی آزاد کشمیر میں حکومت بنائے گی تو پہلے دن ہم تنخواہ اور پنشن میں اضافہ کریں گے تاکہ یہاں کے عوام معاشی طور پر ایک بہتر زندگی گزاریں اور یہ خطہ ترقی کرے اجلاس میں پولنگ ڈے حوالے سے تیاریوں کو حتمی شکل دی گئی اس سلسلہ میں کمیٹیاں تشکیل دی گئیں اور فیصلہ کیا گیا کہ حکومتی جماعت نے اگر دھاندلی کی تو پیپلزپارٹی بھرپور احتجاج کرے گی.

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں