7

ڈیجیٹل ٹیکنالوجی کے دور میں بھی کتب بینی کا رواج ختم نہ ہوسکا،ڈپٹی کمشنر علی شہزاد

ملتان,ڈپٹی کمشنرعلی شہزاد نے کہا ہے کہ کتاب انسان،معاشرے اور تہذیب کے ارتقاء میں اپنا بھرپور کردار ادا کرتی ہے,ڈیجیٹل ٹیکنالوجی کے اس دور میں انٹر نیٹ کے ذریعے کسی بھی کتاب تک آسانی سے رسائی حاصل کی جاسکتی ہے,وہ ملتان ٹی ہائوس میں رازش لیاقت پوری کی کتاب”اسلامیہ یونیورسٹی بہاولپور، عہد ڈاکٹر اطہر محبوب کی تقریب رونمائی” کے موقع پر بطور مہمان خصوصی خطاب کررہے تھے،وائس چانسلر اسلامیہ یونیورسٹی ڈاکٹر اطہر محبوب، میاں نورالحق جھنڈیر، پروفیسر حمید رضا صدیقی،ڈاکٹر امجد بخاری،بریگیڈئر ر قیصر مہے،ظہور دھریجہ، پروفیسر مقبول گیلانی اور دیگر ادبی شخصیات بھی تقریب میں موجود تھیں،ڈپٹی کمشنر علی شہزاد نے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ وہ رازش لیاقت پوری کو تعلیم جیسے مقدس پیشے سے وابستہ شخصیت اور درسگاہ بارے کتاب لکھنے پر خراج تحسین پیش کرتے ہیں،انہوں نے کہا کہ ملتان کی تعمیر و ترقی میں بھرپور کردار ادا کرنا انکی اولین خواہش ہے،علی شہزاد نے کہا کہ ایک ادب دوست ہونے کے ناطے ملتان ٹی ہاوس آ کر انہیں بہت خوشی ہوئی ہے، ملتان ٹی ہاوس کی تزئین و آرائش کی جائے گی اور سہولیات میں اضافہ کیا جائے گا،وائس چانسلر اسلامیہ یونیورسٹی بہاولپور ڈاکٹر اطہر محبوب نے کہا کہ اعلیٰ تعلیم کے بغیر کسی ملک کی معاشی ترقی ممکن نہیں،انہوں نے بتایا کہ اسلامیہ یونیورسٹی کے تحت سویا بین اور مکئی کے بیج پر تحقیق کو سی پیک منصوبے میں شامل کر لیا گیا ہے،اس ریسرچ پراجیکٹ کی تکمیل سے ملک کو سالانہ 4ارب ڈالر کی بچت ہو گی۔میاں عبدالحق جھنڈیر نے کہا کہ کتاب کے ذریعے علم کی طاقت حاصل ہوتی ہے جو کامیابی کا ذریعہ بنتی ہے،بریگیڈئیر ر قیصر مہے نے کہا کہ جنوبی پنجاب میں مختلف شعبوں میں کام کرنیوالی قابل شخصیات کی حوصلہ افزائی کی ضرورت ہے،پروفیسر حمید رضا صدیقی نے کہا کہ وائس چانسلر ڈاکٹراطہر محبوب ایک خاص وژن اور سوچ کے ذریعے تعلیم کی ترقی میں کردار ادا کررہے ہیں، ڈاکٹر امجد بخاری نے کہا کہ رازش لیاقت پوری کی کتاب سے پروفیسر ڈاکٹر اطہر محبوب پر مزید بہتر کارکردگی دکھانے کے لئے دباو بڑھے گا۔انہوں نے کہا کہ شرح خواندگی میں اضافے کے باوجود پاکستانی قوم کا معاشرتی ذمہ داریوں کی ادائیگی میں طرز عمل ذمہ دارانہ نہیں۔ظہور دھریجہ نے کہا کہ کتابیں قوموں کے وقار میں اضافہ کرتی ہیں۔انہوں نے کہا کہ ڈپٹی کمشنر علی شہزاد ملتان کی عظمت رفتہ کو بحال کرنے کی منصوبہ بندی کررہے ہیں جو کہ خوش آئند بات ہے۔ظہور دھریجہ نے” آگرہ اگر، دلی مگر، ملتان سب کا پدر” محاورے کا حوالہ دیتے ہوئے کہا کہ ملتان پوری دنیا میں اپنی ایک منفرد تاریخ رکھتا ہے۔ تمام مقررین نے اپنے خطاب میں وائس چانسلر ڈاکٹر اطہر محبوب کو اسلامیہ یونیورسٹی بہاولپور اور خواجہ فرید یونیورسٹی آف ٹیکنالوجی رحیم یار خان کی ترقی کے لئے انکی خدمات پر انہیں زبردست خراج تحسین پیش کیا۔تقریب میں مختلف شعبوں میں نمایاں کردار ادا کرنے والی شخصیات کو ایوارڈ بھی دئے گئے،
۔ایوار ڈ حاصل کرنیوالوں میں شنبو لال، رستم حیدری، مظہر جاوید، پروفیسر مظہر گیلانی،سجاد ملک،فیاض اعوان، پروفیسر معظم درانی،شفقت ملک، آسیہ رفیق اور شہناز سیال شامل تھیں۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں