10

کارڈیالوجی میں ایگزیکٹو ڈائریکٹر کی عدم موجودگی،مالی معاملات معطل،ملازمین کا احتجاج

ملتان(سٹاف رپورٹر)چوہدری پرویز الہیٰ انسٹی ٹیوٹ آف کارڈیالوجی میں ایگزیکٹو ڈائریکٹر کی عدم موجودگی اور ڈی ڈی پاورز کسی کے پاس نہ ہونے کے باعث ادارے کے انتظامی اور مالی معاملات معطل ہو کر رہ گئے ہیں،یہاں تک کہ ملازمین کو اس ماہ کی تنخواہیں بھی نہ مل سکیں،ایگزیکٹو ڈائریکٹر کاعہدہ گزشتہ تین ہفتوں سے خالی ہےاور سابق ای ڈی وائس چانسلر نشتر ہسپتال کے عہدے پر فائز ہونے کے بعد یہ عہدہ بھی اپنے پاس رکھنا چاہتے ہیں اور ابھی تک اس عہدے کا چارج بھی انہوں نے نہیں چھوڑا،اس حوالے سے کارڈیالوجی سنٹر کے ملازمین نے احتجاجی مظاہرہ کیا،پاکستان میڈیکل ایسوسی ا یشن کے صدر ڈاکٹر مسعود الحسن ہراج نے مظاہرے کی قیادت کی،انہوں نے کہا کہ ای ڈی کا عہدہ فوری طور پر سینئر ڈاکٹر کو دیا جائے ورنہ نتائج کی ذمہ دار انتظامیہ ہو گی،ملازمین نے وزیراعلیٰ پنجاب سمیت دیگر اعلیٰ حکام سے مطالبہ کیا ہے کہ سب سے سینئر ڈاکٹر کی اس عہدے پر تعیناتی کی جائے تاکہ ادارے کے معاملات احسن طریقے سے چل سکیں،ذرائع کے مطابق ایک صوبائی وزیر کی مداخلت کے باعث یہ تقرری کھٹائی میں پڑی ہوئی ہے،بعض ذرائع کے مطابق آئندہ ماہ کارڈیالوجی انسٹی ٹیوٹ میں مختلف منصوبوں کیلئے ڈیڑھ ارب روپے کے ٹینڈر ہونے ہیں جس کے باعث کرپٹ مافیا یہ تقرری نہیں ہونے دے رہا تاکہ ان ٹینڈروں سے کمیشن حاصل کیا جاسکے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں