8

کاشتکاروں کو ابتک10876 کسان کارڈ جاری کئے جاچکے ہیں،ڈپٹی کمشنرعلی شہزاد

ملتان(رائو نعمان سے)ڈپٹی کمشنر علی شہزاد نے کہا ہے کہ زراعت ملک کی معیشت میں ریڑھ کی ہڈی کی حیثیت رکھتی ہے،حکومت کی بہتر پالیسیوں کی وجہ سے زرعی معیشت نے کروٹ لی،انہوں نے کہا ہے کہ کاشتکار کو سبسڈی فراہم کرنے کیلئے کسان کارڈ کا اجرا ایک انقلابی اقدام ہے،محکمہ زراعت کسان کارڈ حاصل کرنے کے لئے فارمرز کی رہنمائی کرے،وہ ایگریکلچر ایڈوائزری اور ٹاسک فورس کے مشترکہ اجلاس سے خطاب کررہے تھے،اجلاس میں محکمہ زراعت،پیسٹی سائیڈ، لائیوسٹاک،ایگری لیب اور پولیس کے افسران کی ،کھاد ڈیلرز اور کاشتکاروں کے نمائندوں نے شرکت کی،ڈپٹی کمشنرعلی شہزاد نے کہا کہ کاشتکاروں کو ابتک10876 کسان کارڈ جاری کئے گئے ہیں، کسان کارڈ کے لئے کاشتکاروں کی رجسٹریشن کا عمل تیز کرنے کی ضرورت ہے تاکہ حکومت کی طرف سے مقررہ ہدف حاصل کیا جا سکے،انہوں نے کہا کہ ماضی میں کپاس زر مبادلہ کمانے کا ایک اہم ذریعہ تھی،لیکن کپاس کی فصل کی بیماریوں کا تدارک نہ کرنے کی وجہ سے جنوبی پنجاب کا کسان کاٹن کراپ کی مالی ثمرات سے محروم ہو گیا ہے،علی شہزاد نے کہا کہ کاٹن کراپ کی بہتری کے لئے کسانوں کی تربیت کی جائے،غیر معیاری پیسٹی سائیڈ اور کھادوں کے خلاف آپریشن لانچ کیا جائے اور اس کاروبار میں ملوث عناصر کو عدالتوں سے سزائیں دلوائی جائیں،انہوں نے واٹر اور سائل ٹیسٹنگ کے عمل میں کسانوں کی بھرپور معاونت کرنے کی بھی ہدایت کی،اس موقع پر ڈپٹی کمشنر کو محکمہ زراعت کی طرف سے اٹھائے گئے مختلف اقدامات بارے بریفنگ بھی دی گئی۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں