5

کروڑ کی کرپشن‘ ذمہ دار لیڈی ڈاکٹر کی موجودگی میں دوسری انکوائری

ٹبہ سلطان پور،رورل ہیلتھ سنٹر کرپشن کیس سفارش اوررشوت کی نظر دوسری مرتبہ انکوائری شروع ،لیکن ملزمہ سینئر میڈیکل آ فیسرڈاکٹر شازیہ اقبال کی سیٹ پر تاحال براجمان شہریوں کاوزیرصحت سے فوری نوٹس لینے کا مطالبہ، تفصیل کے مطابق تقریباً ایک سال کا عرصہ بیت چکا ہے رورل ہیلتھ سنٹر ٹبہ سلطان پور کی انچارج لیڈی ڈاکٹر شازیہ اقبال کی ایک کروڑ کی کرپشن سامنے آ ئی تو محکمہ ہیلتھ وہاڑی نے تحصیل وہاڑی ،بوریوالااورمیلسی کے سینئر ڈاکٹرز کی ٹیم پرمشتمل انکوائری کمیٹی بنائی انکوائری کمیٹی نے ڈاکٹر شازیہ اقبال کے زمہ 14لاکھ کی کرپشن لگائی اور سخت کاروائی کی تجویزدی لیکن سفارش اوررشوت کے بدلے کاروائی بھی روک لی گئی اور ڈاکٹر شازیہ اقبال کو معطل بھی نہیں کیاگیااب سیکرٹری ہیلتھ اینڈ سیکنڈری پنجاب نے ڈائریکٹر ہیلتھ سروسز ساہیوال کو دوبارہ انکوائری کے لیے انکوائری ہیڈمقررکیااوراب چھان بین شروع ہوچکی ہے شہریوں محمدعامر،اسدعلی،عابدحسین،وقارحسین،محمدصابر،فدہ حسین،شاکرحسین،محمدعبداللہ،شارخ،اویس محمد،محمدالیاس ودیگرنے وزیر صحت سے مطالبہ کیا ہے کہ ذمہ داروں کے خلاف سخت کاروائی عمل میں لائی جائے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں