17

کورونا کی آڑ میں بار بار لاک ڈاؤن سے ملکی معیشت کی تباہی کے سوا کچھ حاصل نہ ہو گا،مرکزی تنظیم تاجران

ملتان(سٹاف رپورٹر)مرکزی تنظیم تاجران پاکستان کے مرکزی چیئرمین خواجہ سلیمان صدیقی،جنوبی پنجاب کے صدر شیخ جاوید اختر، ملتان کے صدر خالد محمود قریشی،ایل ایم کیو روڈ کے صدر خواجہ احمد فراز صدیقی،اوردو بازار کے صدر چوہدری عبدالحمید جٹ،اکبر روڈ کے صدر شیخ شفیق،مصوم شاہ روڈ کے صدر سید خضر شاہ، مدنیہ مارکیٹ کے صدر رضوان قریشی نے کہا ہے کہ کورونا وباء اپنی جگہ لیکن کورونا وبا  کی آڑ میں بار بار لاک ڈاؤن سے سوائے ملکی معیشت کی تباہی کے سوا کچھ حاصل نہ ہو گا،اسی لئے حکومت کو چاہیئے کہ وہ ہفتہ میں دو روز کی چھٹی کے بجائے ایک دن کے لئے چھٹی کا فیصلہ کرے اور رات کو 8بجے کی بجائے دس بجے تک دکانیں کھلی رکھنے کے لئے احکامات جاری کئے جائیں،تاجر برادری سالانہ اربوں روپے کا حکومت کو ٹیکس دیتی ہے اگر ہفتہ میں دو روز چھٹی اور رات 8بجے دکانیں بند کی جائیں گی تو ملکی معیشت میں استحکام کیسے آئے گا،اسی لئے حکومت اپنے فیصلے پر نظر ثانی کرے،تاجر برادری پہلے ہی گذشتہ دو سالوں سے کورونا وباء کی وجہ سے معاشی بدحالی کا شکار ہے اسی لئے انہیں مزید بدحالی کی طرف نہ دکھیلا جائے،خواجہ سلیمان صدیقی نے مزید کہا کہ حکومت تحصیل و ضلع کی سطح پر انتظامیہ کو ہدایت دے کہ وہ کرونا وباء کی آڑ میں چھوٹے تاجروں، دکانداروں کو حراساں و پریشان نہ کریں اور نہ ہی ان پر مقدمات بنائیں اور لوٹ مار کریں ایسا نہ ہو کہ تاجر برادری سڑکوں پر نکلنے پر مجبور ہو جائے،کیونکہ تاجر برادری پہلے ہی معاشی بدحالی کی وجہ سے شدید پریشانی سے دوچار ہے اور بار بار کرونا وباء کی وجہ سے دکانوں کی بندش کے باعث کاروبار بھی متاثر ہو کر ر ہ گئے ہیں۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں