8

کہروڑپکا میں اتائیت کا راج ،شہری موت کے منہ میں جانے لگے

کہروڑپکا،انگوٹھا چھاپ ڈاکٹر بن گئے،پرائیوٹ ہسپتالوں میں روزانہ کی بنیاد پر اموات کا سلسلہ جاری،سٹیرائیڈ دے کر چھوٹے بچوں کی جانوں سے کھیلنے لگے،پیسے کے لالچ میں اتائی موذی امراض پھیلانے میں مصروف،تفصیلات کے مطابق کہروڑپکا میں اتائیت کا راج ہے انگوٹھا چھاپ اتائی مختلف جعلی ڈاکٹروں کے فرضی بورڈ لگا کر بیماریاں تقسیم کرنے لگے،درجنوں عطائیوں نے غیر قانونی طور پر میڈیکل سٹور کلینک بنا کر نیلی پیلی گولیاں دے کر سیکڑوں لوگوں کے گردے فیل کر دئیے اور مختلف بیماریوں کا شکار مریض گھروں کے اندر ہی دم توڑ گئے،اسی طرح پرائیوٹ ہسپتالوں اجمل سرجیکل،شگفتہ ٹرسٹ،السعید،قریشی سرجیکل،احمد سرجیکل،نون سرجیکل کے علاوہ درجنوں سرجیکل ہسپتالوں میں شہریوں کو موت کے منہ میں دھکیلا جا رہا ہے،اسی طرح کہروڑپکا کے گردونواح پل 60ہزار پر اصغر بوہڑ عطائی ڈاکٹر نیو بائی پاس پر میؤ کلینک،قادر پور چمنہ میں عطائی ڈاکٹر شریف،ڈاکٹر فلک شیر،ڈاکٹر نعیم،ٹبی وڈاں میں عطائی ڈاکٹر سعید سیال ،جاوید کھوکھر،صادق شامل ہیں ۔ کہروڑپکا کے شہر وسط علاقوں میں کھلے عام غیر قانونی طور پر میڈیکل سٹورز کی بھرمار ہے۔ مبینہ ذرائع سے معلوم ہوا ہے ڈرگ انسپکٹر کہروڑپکاڈرگ انسپکٹر دنیاپور کے ساتھ ملی بھگت کرکے علاقہ غیر میں آ کر کھلے عام منتھلیوں کا سلسلہ شرو ع کر رکھا ہے۔بدنام زمانہ و راشی ٹاوٹ شاہنواز منتھلی لے کر ان دونوں ڈرگ انسپکٹرز میں تقسیم کرتا ہے نا ماننے والے عطائیوں کو جیل کی ہوا کے علاوہ ان کے سٹور کلینک بھی سیل کر دیتے ہیں ۔ ڈرگ انسپکٹر کہروڑپکا اسامہ کیمطاق میں نے کبھی رشوت نہیں لی مجھ الزام لگایا جا رہا ہے ڈرگ انسپکٹر کہروڑپکا کا موقف عوامی سماجی حلقوں نے کہروڑپکا میں بڑھتی ہوئی کرپشن پر بڑے گہرے غم وغصے کا اظہار کیا ہے اور وسیع پیمانے پر تحقیقات کرانے کا بھی مطالبہ کیا ہے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں